Friday , December 15 2017
Home / سیاسیات / وجئے مالیا کا راجیہ سبھا سے استعفیٰ منظور

وجئے مالیا کا راجیہ سبھا سے استعفیٰ منظور

دھمکیاں دینے پر قرضوں کی شخصی ضمانت دینے کا مالیا کا ادعا
نئی دہلی ۔ 4 مئی (سیاست ڈاٹ کام) راجیہ سبھا میں وجئے مالیا کی میعاد آج ختم ہوگئی جبکہ صدرنشین حامد انصاری نے ان کے تازہ استعفیٰ پر دستخط کردیئے اور اسے منظور کرلیا۔ ایوان میں فیصلے کا اعلان کرتے ہوئے نائب صدرنشین کورین نے کہا کہ مالیا کا 3 مئی کا استعفیٰ جو صدرنشین کو وصول ہوا تھا، منظور کرلیا اور آج اسے وہ راجیہ سبھا کے رکن برقرار نہیں رہے۔ ایک دن قبل اخلاقیات کمیٹی جس کے صدر کانگریسی قائد کرن سنگھ ہیں، سفارش کی تھی کہ مالیا کو فوری رکنیت سے برطرف کردیا جائے۔ حامدانصاری نے کل استعفیٰ منظور کرنے سے انکار کردیا تھا کیونکہ مکتوب مناسب فارم میں تحریر نہیں کیا گیا تھا اور اس پر مالیا کے اصلی دستخط بھی نہیں تھے۔ اخلاقیات کمیٹی نے کہا کہ مجھے امید ہیکہ وجئے مالیا کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ دریں اثناء وجئے مالیا نے اپنے موقف کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ 9 ہزار 431 کروڑ روپئے قرض کی ادائیگی کے سلسلہ میں جب انہیں منظور کیا گیا تو انہوں نے دھمکیوں کے زیراثر شخصی ضمانت دی تھی۔ سپریم کورٹ نے مالیا کو ہدایت دی تھی کہ ان کی درخواست کی عاجلانہ یکسوئی کی جائے۔ اخلاقیات کمیٹی نے کہا کہ اس کے متفقہ فیصلے کی کوئی مشکوک بنیاد نہیں ہے۔ وجئے مالیا نے اپنے مکتوب استعفیٰ میں تحریر کیا ہیکہ انہیں ملک میں غالب ماحول پر یقین نہیں ہے اور انہیں اخلاقیات کمیٹی سے انصاف کی توقع بھی نہیں ہے۔ وجئے مالیا نے کہا کہ وہ نیک نام ہونا نہیں چاہتے لیکن انہیں غیرضروری طور پر بدنام کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT