Saturday , December 16 2017
Home / Top Stories / وجئے ملیا کے خلاف منی لانڈرنگ کیس

وجئے ملیا کے خلاف منی لانڈرنگ کیس

IDBI بینک سے 900 کروڑ کے قرض واپسی میں ناکامی کا الزام
ممبئی ۔ 7 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام ) : شراب کے تاجر وجئے ملیا ایک نئی مصیبت میں پھنس گئے ہیں جب کہ انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ نے IDBI بینک سے محصلہ 900 کروڑ روپئے کے قرض کی واپسی میں ناکامی کے سلسلہ میں وجئے ملیا اور دیگر کے خلاف منی لانڈرنگ کیس درج کرلیا ہے ۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سی بی آئی نے بھی گذشتہ سال اس کیس میں ایک ایف آئی آر درج کیا تھا جس کی بنیاد پر قانون انسداد منتقلی رقومات ( منی لانڈرنگ ) کے تحت ایجنسی نے حال ہی میں الزامات عائد کئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ زونل آفس نے اگرچیکہ عمومی نوعیت کا کیس درج کیا ہے لیکن خسارہ سے دوچار کنگ فشر ایرلائنز کے مالیاتی ڈھانچہ اور قانون بیرونی زر مبادلہ کی خلاف ورزی کی بھی تحقیقات کی جائے گی ۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ وجئے ملیا اور دیگر کو بہت جلد پوچھ تاچھ کے لیے طلب کیا جائے گا اور بینک کے متعلقہ عہدیداروں سے دستاویزات وصول کرتے ہوئے معلومات حاصل کی جائیں گی ۔ سی بی آئی کی شکایت میں ملیا اور دیگر جن ناموں کا تذکرہ کیا ہے ۔ ان کے خلاف ای ڈی نے قانون انسداد منی لانڈرنگ کے تحت الزامات عائد کئے ہیں ۔ سی بی آئی نے وجئے ملیا ڈائرکٹر کنگ فشریز ایرلائیز اے رگھوناتھن چیف فینانشیل آفیسر ایر لائنیز IDBI بینک کے نامعلوم عہدیداروںکے خلاف کیس درج کیا ہے ۔ جس میں یہ الزام عائد کیا گیا حدود قرض کے قواعد کے برخلاف رقومات منظور کئے گئے ہیں۔ دریں اثناء بنگلورو سے موصولہ اطلاعات کے بموجب شراب کے مشہور تاجر وجئے ملیا کو اس وقت شدید دھکا پہنچا جب ڈیبٹ ریکوری ٹریبونل (بازیابی قرض عدالت) نے آج اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے ساتھ قرض ادائیگی کیس کی یکسوئی تک 75 ملین ڈالر (515 کرو ڑ) سے استفادہ پر پابندی عائد کردی ہے ۔ ٹریبونل نے ایس پی آئی کی عرضی کو منظور کرتے ہوئے وجئے ملیا کو رقومات کی حصولیابی سے باز رکھا اور آئندہ سماعت کی تاریخ 28 مارچ مقرر ہے۔

TOPPOPULARRECENT