Saturday , November 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / ورلڈ بیڈمینٹن چمپئن شپ ‘ سائنہ کو سلور میڈل ‘ فائنل میں شکست

ورلڈ بیڈمینٹن چمپئن شپ ‘ سائنہ کو سلور میڈل ‘ فائنل میں شکست

اسپین کی کیرولینا مارن نے خطاب کا میابی سے دفاع کیا ۔ آل انگلینڈ چمپئن شپ کے بعد مسلسل دوسری بڑی کامیابی

جکارتہ 16 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) بیڈمینٹن میں پہلی ہدنوستانی عالمی چمپئن بننے سائنہ نیہوال کا خواب آج ادھورا رہ گیا جبکہ انہیں ٹورنمنٹ کے فائنل میں دفاعی چمپئن کیرولینا مارن کے خلاف شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔ یہ مقابلہ آج جکارتہ میں کھیلا گیا ۔ عالمی سطح پر نمبر دو رینکنگ رکھنے والی سائنہ نیہوال کو خطابی مقابلہ میں 16 – 21, 19 – 21 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔ یہ مقابلہ صرف 59 منٹ میں ختم ہوگیا جس میں سائنہ ناکام رہیں۔ انہیں سلور میڈل پر اکتفا کرنا پڑا ۔ سائنہ نیہوال نے حالانکہ اس مقابلہ میں سلور میڈل جیتا لیکن کسی بڑے ٹورنمنٹ کے فائنل میں سائنہ کی یہ مسلسل دوسری شکست ہے ۔ ورلڈ بیڈمینٹن ٹورنمنٹ میں یہ کسی ہندوستانی کھلاڑی کا سب سے بہترین مظاہرہ بھی ہے ۔ وہ ورلڈ بیڈمینٹن کے فائنل میں پہونچنے والی پہلی ہندوستانی کھلاڑی بن گئی ہیں۔ سائنہ کو جاریہ سال کے اوائل میں آل انگلینڈ چمپئن شپ کے فائنل میں بھی کیرولینا مارن کے خلاف شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا ۔ ورلڈ چمپئن شپ میں یہ ہندوستان کیلئے پانچواں میڈل رہا ۔ اس سیق بل پی وی سندھو نے 2013 اور 2014 میں برانز میڈل حاصل کیا تھا

جبکہ جوالا گٹہ اور اشونی پونپا نے 2011 میں ڈبلز مقابلوں میں برانز میڈل حاصل کیا تھا ۔ ہندوستان کے سابق شٹلر پرکاش پاڈوکون 1983 میں یہاں برانز میڈل جیتنے والے پہلے ہندوستانی بیڈمینٹن کھلاڑی تھے ۔ اس فائنل مقابلہ سے قبل سائنہ اور مارن کے مابین چار مقابلے ہوئے تھے اور تین میں سائنہ کو کامیابی ملی تھی ۔ اس طرح بظاہر سائنہ کو اس مقابلہ میں سبقت حاصل تھی لیکن وہ میچ میں اس سبقت کو حقیقت کا روپ نہیں دے پائیں۔ میچ کے آغاز سے ہی اسپین کی کیرولینا مارن کا پلڑا بھاری دکھائی دے رہا تھا ۔ مارن کو آل انگلینڈ چمپئن شپ میں سائنہ کے خلاف ملی کامیابی نے حوصلہ دیا تھا ۔ کیرولینا ہر ایک پوائنٹ کی کامیابی پر آوازیں بلند کر رہی تھیں ۔ انہوں نے ایک سے زائد موقع پر چئیر امپائر کی توجہ بھی مبذول کروانے کی کوشش کی اور اپنی ریاکٹ پر برہمی کا اظہار کرنے پر انہیں خبردار بھی کیا گیا تھا ۔ تاہم مارن نے اسکور کارڈ پر کسی طرح کا منفی اثر پڑنے کا موقع نہیں دیا اور انہوں نے 7 – 7 کے اسکورپر سائنہ کی سرویس بریک کی

جبکہ سائنہ نے ایک آسان سے شاٹ کو نیٹ میں ماردیا ۔ درمیان میں کیرولینا نے 11 – 8 کی سبقت بنالی تھی اور بعد میں اسے 15 – 9 تک کرلیا تھا ۔ اس دوران سائنہ نے مسلسل غلطیاں کیں ۔ سائنہ کو مخالف کھلاڑی سے نمٹنے میں سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا اور انہیں بالآخر اس گیم میں 16 – 21 کے فرق سے شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔ دوسرے گیم میں بھی کیرولینا مارن نے اپنے حوصلے اور حواس برقرار رکھے اور اہم موقعوں پر بہترین مظاہرہ کرتے ہوئے پوائنٹس حاصل کئے ۔ حالانکہ اس گیم میں سائنہ نے اچھی مزاحمت کی اور کچھ موقعوں پر مخالف کھلاڑی کو پریشان بھی کیا لیکن قطعی اسکور میں وہ پیچھے رہ گئیں۔ سائنہ نے ایک موقع پر 13 – 20 ہوگئے اسکور سے واپسی کی لیکن وہ آخری گیم میں اس بہتر کارکردگی کا سلسلہ برقرار نہیں رکھ پائیں اور انہیں بالآخر 19 – 21 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔ کامیابی کے ساتھ ہی کیرولینا مسرت سے اچھل پڑیں جبکہ سائنہ نیہوال مایوسی کے ساتھ خاموش میدان سے نکل گئیں۔

TOPPOPULARRECENT