Saturday , June 23 2018
Home / ہندوستان / ورنداون کی بیواؤں کے بارے میں متنازعہ بیان

ورنداون کی بیواؤں کے بارے میں متنازعہ بیان

متھرانہ 17 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) بالی ووڈ اداکارہ و رکن پارلیمان ہیما مالنی پر ان کے ایک حالیہ بیان پر شدید تنقیدیں کی جارہی ہیں جہاں اُنھوں نے کہا تھا کہ بنگال اور بہار سے تعلق رکھنے والی بیوہ عورتوں کو ورنداون میں بھیڑ بھاڑ کرنے سے اجتناب کرنا چاہئے۔ ورنداون اترپردیش کے ایک مقدس شہر کے طور پر معروف ہے جہاں سماج کی ستائی ہوئی، بیوہ

متھرانہ 17 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) بالی ووڈ اداکارہ و رکن پارلیمان ہیما مالنی پر ان کے ایک حالیہ بیان پر شدید تنقیدیں کی جارہی ہیں جہاں اُنھوں نے کہا تھا کہ بنگال اور بہار سے تعلق رکھنے والی بیوہ عورتوں کو ورنداون میں بھیڑ بھاڑ کرنے سے اجتناب کرنا چاہئے۔ ورنداون اترپردیش کے ایک مقدس شہر کے طور پر معروف ہے جہاں سماج کی ستائی ہوئی، بیوہ اور غریب خواتین نے پناہ لے رکھی ہے۔ ہیما مالنی نے کہاکہ ورنداون کی بیواؤں کے بینک بیالنس ہیں، اچھی آمدنی ہے اور سونے کے لئے بہترین بستر ہیں لیکن اس کے باوجود وہ عادت سے مجبور ہوکر بھیک مانگتی یں۔ 65 سالہ ہیما مالنی نے اپنے حلقہ رائے دہی کا دورہ کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ اُنھوں نے کہاکہ ورنداون میں جملہ 40,000 بیوائیں ہیں اور اب شاید شہر میں مزید بیواؤں کیلئے کوئی گنجائش نہیں ہے۔ بنگال سے بھی بیوہ خواتین کی بڑی تعداد ورنداون پہنچتی ہے۔ وہ لوگ بنگال میں ہی کیوں نہیں رہتے۔ وہاں پر ایک سے بڑھ کر ایک منادر ہیں اور یہی بات ریاست بہار کے بارے میں بھی کہی جاسکتی ہے۔ ایک شیلٹر ہوم کا دورہ کرنے کے بعد ہیما مالنی نے یہ ریمارک کیا کیونکہ شیلٹر ہوم کی حالت انتہائی خستہ پائی گئی تھی۔ اُنھوں نے کہاکہ اس سلسلہ میں وہ وزیراعلیٰ مغربی بنگال ممتا بنرجی سے بات کریں گی۔

TOPPOPULARRECENT