Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / ورنگل میں کانگریس اور بی جے پی ، حکومت کے خلاف بے بنیاد الزامات میں مصروف

ورنگل میں کانگریس اور بی جے پی ، حکومت کے خلاف بے بنیاد الزامات میں مصروف

چیف منسٹر کے سی آر کے نوے فیصد وعدے مکمل ، ٹی آر ایس ایم ایل سی کے پربھاکر بیان
حیدرآباد ۔ 16۔ نومبر (سیاست نیوز) تلنگانہ راشٹرا سمیتی نے الزام عائد کیا کہ کانگریس اور بی جے پی ورنگل لوک سبھا حلقہ میں حکومت کے خلاف بے بنیاد الزامات پر مبنی انتخابی مہم میں مصروف ہیں۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے رکن قانون ساز کونسل کے پربھاکر نے کہا کہ ان دونوں جماعتوں کو عوام سے ووٹ مانگنے کا کوئی حق نہیں پہنچتا کیونکہ دونوں پارٹیاں ورنگل کے عوامی مسائل کی یکسوئی میں ناکام ہوچکی ہیں۔ پربھاکر نے کہا کہ کانگریس پارٹی کو حکومت کو الزام تراشی سے قبل اپنے دور حکومت میں تلنگانہ کو نظرانداز کرنے پر عوام سے معذرت خواہی کرنی چاہئے ۔ کانگریس اور تلگو دیشم نے اپنے دور حکومت میں کبھی بھی تلنگانہ کی ترقی پر توجہ نہیں دی ۔ انہوں نے انتخابی وعدوں کی تکمیل میں حکومت پر ناکامی کے الزام کو مسترد کردیا اور کہا کہ چندر شیکھر راؤ حکومت نے 90 فیصد وعدوں پر عمل آوری کا آغاز کردیا ہے ۔ اس کے علاوہ کئی فلاحی اسکیمات کا آغاز کیا گیا جن کا انتخابی منشور میں وعدہ نہیں کیا گیا تھا ۔ پربھاکر نے کہا کہ تلنگانہ تحریک کے دوران ٹی آر ایس اور اس کی قیادت نے ہمیشہ عہدوں کی قربانی دی۔ تلنگانہ کے حصول کیلئے پارٹی نے کئی بار عہدوں سے استعفیٰ دیا۔ کے سی آر انتخابی مہم کے دوران بارہا یہ اعلان کرتے رہے کہ عہدوں سے زیادہ تلنگانہ ریاست کا حصول اہمیت کا حامل ہے۔ پربھاکر نے کہا کہ تلنگانہ کے حصول کیلئے کے سی آر نے مرکزی کابینہ سے استعفیٰ دیدیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے کانگریس قائدین ہمیشہ اپنے عہدوں سے چمٹے رہے اور انہوں نے تلنگانہ تحریک کی مخالفت کی۔ ٹی آر ایس قائد نے کہا کہ تلنگانہ کانگریس قائدین ہمیشہ آندھرائی قائدین کے زیر اثر رہے اور انہوں نے تحریک میں کوئی رول ادا نہیں کیا ۔ پربھاکر نے کہا کہ تلنگانہ ورنگل کے عوام نے ٹی آر ایس کو کامیاب کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے اور کانگریس و بی جے پی امیدواروں کو بدترین شکست ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT