وزارت دفاع ، داخلہ اور دیگر وزارتوں کے ویب سائیٹس ہیک

اسکرین پر چینی زبان نمودار ، سرکاری ویب سائیٹس ہیک نہیں کئے گئے ، ہارڈویر کی ناکامی سے بند ، سائبر سکیورٹی چیف کی وضاحت

نئی دہلی ۔ /6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کے سرکاری نیٹ ورک سسٹم کو خطرہ لاحق ہے ۔ آج شام وزارت دفاع کے ویب سائیٹس کے علاوہ وزارت داخلہ ، قانون اور لیبر کے ویب سائیٹس کو ہیک کرلیا گیا ۔ ویب سائیٹس کے ہیک کرنے کے پیچھے چین کا ہاتھ ہونے کا شبہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ بعد عہدیداروں نے کہا کہ انہوں نے سرکاری ویب سائیٹس کے اسکرین پر چینی زبان کے بعض کیریکٹرس دیکھے ۔ تاہم اس تعلق سے ٹکنیکل طور پر کوئی توثیق نہیں ہوئی ۔ سائبر سکیورٹی چیف نے کہا کہ یہ ویب سائیٹس ہیک نہیں ہوئے ہیں بلکہ ہارڈ ویئر کی ناکامی سے ویب سائیٹس بند ہوگئے ۔ وزارت دفاع کی سائیٹ پر چینی کیریکٹرس کے نمودار ہونے سے متعلق یہ شبہ ظاہر کیا گیا ہے کہ ان سائیٹس کو چین کی جانب سے ہیک کیا گیا ہوگا ۔ بعض عہدیداروں نے یہ بھی کہا ہے کہ اس میں کوئی ٹکنیکل خرابی دکھائی دیتی ہے ۔ وزیراعظم کے مشیر برائے سائبر سکیورٹی گلشن رائے نے کہا کہ سرکاری ویب سائیٹس پر کچھ مسئلہ پیدا ہوا ہے لیکن یہ ہارڈویر کی ناکامی کی وجہ سے اسٹوریج سسٹم میں گڑبڑ دیکھی گئی ہے ۔ نیشنل انفارمیٹک سنٹر کے سسٹم میں کچھ فنی خرابی پیدا ہوئی ہے ۔ اسی وجہ سے بعض سرکاری ویب سائیٹس میں مسئلہ پیدا ہوا ۔ بلا شبہ سرکاری ویب سائیٹس کو ہیک نہیں کیا گیا ہے ۔ کہیں بھی کسی بھی نوعیت سے اسے ہیک نہیں کہا جاسکتا ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ مختلف وزارتوں کے ویب سائیٹس ہیک کرلئے جانے کی اطلاع کے بعد ان تمام سسٹموں کو تبدیل کیا گیا ۔ ان سسٹمس کو ری سیٹ کیا جارہا ہے اور ہم توقع رکھتے ہیں کہ بہت جلد یہ سسٹم بحال ہوجائیں گے ۔ اس بارے میں کسی قسم کی تشویش کی ضرورت نہیں ہے ۔ مستقبل میں بھی ہم چوکسی اختیار کریں گے اور ایسے کسی ہیک کئے جانے کی کوششوں کوناکام بنائیں گے ۔ وزارت دفاع کے ترجمان نے کہا کہ نیشنل انفارمیٹک سنٹر اپنے ویب سائیٹس کو بحال کرنے کی کوشش کررہا ہے ۔ وزیر دفاع نرملا سیتارامن نے ٹوئیٹر پر پیام لوڈ کرتے ہوئے لکھا کہ وزارت دفاع کی ویب سائیٹ کو ہیک کئے جانے کی اطلاع کے بعد فوری کارروائی شروع کی گئی اور ویب سائیٹ کو بہت جلد بحال کیا جائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT