Monday , June 18 2018
Home / ہندوستان / وزارت عظمیٰ کے دیگر امیدواروں سے زیادہ اہل ہونے کا ادعا

وزارت عظمیٰ کے دیگر امیدواروں سے زیادہ اہل ہونے کا ادعا

بتیا 6 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے آج اپنے وزارت عظمیٰ کے لئے عزائم کو آشکار کردیا۔ اُنھوں نے کہاکہ وہ اِس اعلیٰ عہدہ کے لئے کوشش کرنے والے دیگر تمام امیدواروں سے زیادہ اہل اور تجربہ کار ہیں۔ اُنھوں نے ریاست بہار کے لئے خصوصی موقف کا مطالبہ کرنے کے لئے منعقدہ سنکلپ یاترا سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ میں وزارت عظمیٰ

بتیا 6 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے آج اپنے وزارت عظمیٰ کے لئے عزائم کو آشکار کردیا۔ اُنھوں نے کہاکہ وہ اِس اعلیٰ عہدہ کے لئے کوشش کرنے والے دیگر تمام امیدواروں سے زیادہ اہل اور تجربہ کار ہیں۔ اُنھوں نے ریاست بہار کے لئے خصوصی موقف کا مطالبہ کرنے کے لئے منعقدہ سنکلپ یاترا سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ میں وزارت عظمیٰ کے عہدہ کے دیگر امیدواروں کی بہ نسبت زیادہ اہل ہیں۔ بی جے پی کے وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی یا کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی کا نام لئے بغیر اُنھوں نے کہاکہ ایک کے پاس پارلیمنٹ کا کوئی تجربہ نہیں ہے جبکہ دوسرا خود ریاست چلانے کا کوئی تجربہ نہیں رکھتا۔ مجھے دونوں تجربے حاصل ہیں۔ کیا میں اِن کی بہ نسبت کم اہل ہوں۔ واضح طور پر یہ پوچھنے پر کہ کیا وہ وزارت عظمیٰ کے امیدوار ہیں، نتیش کمار نے کہاکہ اِن کی پارٹی جے ڈی (یو) چھوٹی سی ہے اور اعتدال پسند ہے۔ وہ بلند بانگ دعوے نہیں کرتی بلکہ عوام کے لئے خلوص کے ساتھ کام کرنے میں یقین رکھتی ہے۔

یہ کہنے پر کہ سینئر قائدین جیسے ملائم سنگھ یادو اور جیہ للیتا جن کی پارٹیاں سماج وادی پارٹی اور انا ڈی ایم کے تیسرے محاذ کی رکن ہیں، اشارہ دے چکے ہیں کہ وہ وزارت عظمیٰ کے لئے دوڑ میں شامل ہیں۔ اُنھوں نے فوری ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ اِس میں غلطی کیا ہے۔ ہر پارٹی کی اپنی حکمت عملی ہوتی ہے تاکہ عوام کی اعظم ترین تائید حاصل کرسکے۔ نتیش کمار نے دعویٰ کیاکہ تمام انتخابی سروے کسی نہ کسی کی زیرسرپرستی منعقد کروائے گئے ہیں، چنانچہ آخرکار وہ سب کے سب غلط ثابت ہوجائیں گے اور نہ تو بی جے پی اور نہ کانگریس برسر اقتدار آئے گی۔ اُنھوں نے کہاکہ درحقیقت نیا گروپ جس کو آپ تیسرا محاذ کہہ رہے ہیں، پہلا محاذ ہوگا۔ غیر کانگریسی اور غیر بی جے پی پارٹیاں انتخابات کے بعد سب سے زیادہ تعداد میں ہوں گی۔ 11 غیر کانگریسی اور غیر بی جے پی پارٹیوں کے وفاقی محاذ کا حوالہ دیتے ہوئے جس کے لئے وہ بانیوں میں سے ایک ہیں، واضح طور پر کانگریس یا بی جے پی کی انتخابات کے بعد تائید کے امکان کو اُنھوں نے مسترد کردیا۔ چیف منسٹر گجرات پر واضح طور پر تنقید کرتے ہوئے اُنھوں نے کہاکہ 2002 ء کے فسادات این ڈی اے کی موت ثابت ہوئے۔ 2004 ء کے عام انتخابات کا نتیجہ بھی یہی نکلے تھا۔ نتیش کمار کی مودی سے دشمنی کوئی راز کی بات نہیں ہے۔ اُن کی وجہ سے ہی نتیش کمار نے بی جے پی کے ساتھ 17 سالہ اتحاد ختم کردیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT