Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / وزراء کو تفصیلات فراہم کرنے عہدیداروں کو ہدایت

وزراء کو تفصیلات فراہم کرنے عہدیداروں کو ہدایت

اسمبلی میں بحث کے دوران اپوزیشن سے نمٹنے چوکسی کیلئے کے سی آر کا مشورہ

اسمبلی میں بحث کے دوران اپوزیشن سے نمٹنے چوکسی کیلئے کے سی آر کا مشورہ
حیدرآباد 7 نومبر ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راو نے وزراء اور اعلی عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کیا۔ جس میں بجٹ اجلاس میں حکومت اور برسر اقتدار پارٹی کی حکمت عملی کو قطعیت دی گئی۔ باوثوق ذرائع کے مطابق چیف منسٹر نے وزراء کو ہدایت دی کہ وہ اپنے متعلقہ محکمہ جات کے بارے میںمکمل تفصیلات کے ساتھ اسمبلی میں موجود رہیں تا کہ اپوزیشن کی جانب سے کسی بھی سوال کا اطمینان بخش جواب دیا جاسکے ۔ انہوں نے و زراء سے کہا کہ اسمبلی سیشن کے سلسلہ میں وزراء کو زائد قلمدان حوالے کئے گئے ہیں اس کے بارے میں بھی عہدیداروں سے مکمل تفصیلات حاصل کرلیں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ وقفہ سوالات اور مباحث کے دوران وزراء کے علاوہ ارکان اسمبلی کے پاس بھی موضوع سے متعلق تفصیلات ہونی چاہئے تا کہ اپوزیشن کے کسی بھی حملے کا مقابلہ کیا جاسکے ۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ کسی بھی سوال کے بارے میں وزراء کو مکمل تفصیلات فراہم کریں تا کہ ضمنی سوالات کے سلسلہ میں حکومت کو اپوزیشن کی تنقیدوں کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ چیف منسٹر نے وزراء سے کہا کہ وہ اسمبلی اجلاس کے بعد اپنے انتخابی حلقوں میں مصروف ہوجائیں اور حکومت کی جانب سے شروع کی گئی اسکیمات پر موثر عمل آوری کو یقینی بنائیں۔ انہو ںنے پنچایت راج، آر اینڈ بی سڑکوں کی تعمیر ،تالابوں کا تحفظ ،پنشن کی تقسیم، راشن کارڈس کی اجرائی، کلیان لکشمی اور شادی مبارک جیسی اسکیمات پر موثر عمل آوری کو یقینی بنانے کی ہدایت دی ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ سرکاری اسکیمات پر عمل آوری میں کسی بھی طرح کی بے قاعدگی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے وزراء سے کہا کہ وہ نہ صرف اسمبلی اور کونسل میں موجود رہیں بلکہ اپنے متعلقہ اضلاع سے تعلق رکھنے والے ارکان کی موجودگی کو یقینی بنائیں۔ اسمبلی اور کونسل میں برسر اقتدار جماعت کے ارکان کی صد فیصد حاضری کو یقینی بنانے کیلئے بعض وزراء کو ذمہ داری دی گئی ہے ۔ پیر سے کسانوں کی خودکشی،برقی بحران اور زرعی شعبہ کے مسائل پر مباحث کا آغاز ہوگا لہذا وزراء اور ارکان اسمبلی کو مباحث میں حصہ لینے اور حکومت کے موقف کا دفاع کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ وزراء سے کہا گیا ہے کہ وہ آندھرا پردیش حکومت کی جانب سے تلنگانہ کے ساتھ کی جارہی ناانصافیوں کو دستاویزات اور اعداد و شمار کے ساتھ پیش کریں تا کہ تلگودیشم کو بے نقاب کیا جاسکے ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ وہ بجٹ سیشن کے دوران وقتاً فوقتاً وزراء کی کارکردگی کا جائزہ لیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT