Monday , June 25 2018
Home / ہندوستان / وزیراعظم اسرائیل کا دورہ ہند ،تجارتی اور دفاعی تعاون پر غور

وزیراعظم اسرائیل کا دورہ ہند ،تجارتی اور دفاعی تعاون پر غور

اقوام متحدہ میں ہندوستان کے ایک ووٹ سے باہمی تعلقات غیرمتاثر :اسرائیلی سفیر

نئی دہلی ۔ /12 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اہم شعبوں جیسے تجارت اور دفاع میں باہمی تعلقات کو گہرا کرنے کے علاوہ امکان ہے کہ کئی لاکھ ڈالر مالیتی اسرائیلی دبابہ شکن میزائیل کے سودے کو وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو کے دورہ ہند کے موقع پر قطعیت دی جائے ۔ چند دن بعد وزیراعظم اسرائیل ہندوستان کے دورہ پر آنے والے ہیں ۔ جبکہ اقوام متحدہ میں یروشلم کے مسئلہ پر ہندوستان اسرائیل کے خلاف ووٹ دے چکا ہے جس کی وجہ سے دونوں ممالک کے تعلقات کشیدہ ہوگئے تھے ۔ اسرائیل کے سفیر برائے ہندوستان ڈینیل کارمن نے آج ہندوستان کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں امریکی قرارداد پر جس میں یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کیا گیا تھا اور اپنا سفارت خانہ تل ابیب سے یروشلم منتقل کرنے کا اعلان کیا گیا تھا اور ہندوستان نے اس کی مخالفت کی تھی ، کو غیراہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستان ہند ۔ اسرائیل تعلقات کے سلسلے میں کسی کا اثر و رسوخ قبول نہیں کرے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کے خیال میں ہندوستان کے امریکی قرارداد پر موقف سے دونوں ممالک کے تعلقات متاثر نہیں ہوں گے ۔ صرف ایک ووٹ ان کے استحکام کو کم نہیں کرسکتا ۔ کارمن نے کہا کہ یہ کوئی خوشگوار صورتحال نہیں ہے لیکن بین الاقوامی برادری نے اس مسئلہ پر امریکی قرارداد کی مخالفت میں رائے دہی تھی ۔ اسرائیلی سفیر نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان بض اوقات درخواستوں سے متاثر ہوجاتا ہے اور بعض اوقات اسرائیل کی تائید کرتا ہے ۔ انہوں نے ایک پریس کانفرنس سے خظاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہر وقت تمام درخواستوں کو قبول نہیں کرسکتے ۔ یہی وجہ ہے کہ دونوں ممالک میں ایک ہی مسئلے پر مختلف قسم کا موقف ہوتا ہے ۔ گزشتہ ماہ ہندوستان نے ان 127 ممالک میں شمولیت اختیار کرلی تھی جنہوں نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اسرائیل مخالف قرارداد کی تائید کی تھی جو صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کے خلاف پیش کی گئی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT