Saturday , November 25 2017
Home / Top Stories / وزیراعظم جاپان کی آمد، آج وزیراعظم ہند سے بات چیت

وزیراعظم جاپان کی آمد، آج وزیراعظم ہند سے بات چیت

چوٹی کانفرنس سطح کا 9 واں سالانہ اجلاس ، وزیرخارجہ سشماسوراج سے باہمی دلچسپی کے وسیع تر موضوعات پر گفتگو

نئی دہلی ۔ 11 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم جاپان شنزوایب آج تین روزہ سرکاری دورہ پر ہندوستان پہنچ گئے تاکہ وزیراعظم ہند نریندر مودی سے چوٹی کانفرنس سطح کی سالانہ بات چیت میں شرکت کریں۔ دونوں فریقین توقع ہیکہ 98 ہزار کروڑ روپئے مالیتی ایک معاہدہ کو قطعیت دیں گے اور ہندوستان میں اولین بولیٹ ٹرین کیلئے پٹریاں بچھائی جائیں گی اور سیول نیوکلیئر پروگرام کے موضوع پربات چیت ہوگی۔ شنزوایب کا استقبال کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے انہیں ایک بہترین قائد قرار دیا اور کہا کہ ان کے دورہ سے دونوں ممالک کے باہمی تعلقات میں بہتری آئے گی۔ ہندوستان میں شنزوایب کا خیرمقدم ہے۔ مودی نے اپنے ٹوئیٹر پر تحریر کیا کہ وزیراعظم جاپان کے دورہ ہند سے ہند ۔ جاپان تعلقات مزید مستحکم اور پرجوش ہوجائیں گے۔ اپنے دورہ کے موقع پر وزیراعظم جاپان نے ٹوئیٹر پر تحریر کیا کہ وہ کل نریندر مودی سے چوٹی کانفرنس کی سطح کی بات چیت کے منتظر ہیں اور انہیں امید ہیکہ ہند ۔ جاپان تعلقات کے ایک نئے دور کا اس بات چیت سے آغاز ہوگا۔ ہند ۔ جاپان چوٹی سطح کی یہ 9 ویں سالانہ بات چیت ہے۔ دونوں قائدین سابقہ مختلف فیصلوں پر عمل آوری کا جائزہ لیں گے جو سابقہ ملاقاتوں میں کئے گئے تھے اور باہمی تجارت و سرمایہ کاری میں مزید اضافہ کے وسائل تلاش کریں گے اور ان پر تبادلہ خیال کریں گے۔ ہندوستان میں آمد کے چند ہی گھنٹوں بعد وزیرخارجہ ہندوستان سشماسوراج نے وزیراعظم جاپان شنزوایب سے ملاقات کی جس کے دوران بشتر باہمی دلچسپی کے مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ہند ۔ پاک مذاکرات کا خیرمقدم کیا گیا اور سشماسوراج کے دورہ پاکسان کی ستائش کی گئی۔ وزیراعظم جاپان نے ہند ۔ پاک جامع مذاکرات کے احیاء کا بھی خیرمقدم کیا۔ امکان ہیکہ دونوں ممالک کے درمیان کئی معاہدہ طئے پائیں گے اور کئی شعبوں میں باہمی تعاون میں اضافہ ہوگا۔

توقع ہیکہ مودی ۔ ایب بات چیت کے دوران معاہدوں پر دستخط کئے جائیں گے۔ دونوں قائدین انفراسٹرکچر کے کئی پراجکٹ پر تبادلہ خیال کریں گے۔ پرعزم اسمارٹ سٹیز پروگرام پر غوروخوض کیا جائے گا۔ بولیٹ ٹرین نیٹ ورک کو قطعیت دی جائے گی۔ ہندوستان کے معاشی مرکز ممبئی اور احمدآباد کے درمیان اولین بولیٹ ٹرین کا آغاز ہوگا۔ احمدآباد مودی کی آبائی ریاست گجرات کا دارالحکومت ہے۔ دونوں شہروں کے درمیان بولی ٹرین کے سفر کا وقت تقریباً 8 گھنٹے سے کم ہوکر صرف تین گھنٹے ہوجائے گا جس کے دوران یہ ٹرین 545 کیلو میٹر کا فاصلہ طئے کرے گی۔ ذرائع کے بموجب دونوں ممالک مجوزہ نیوکلیئر معاہدے میں رفتار پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ بات چیت کے بعد وزیراعظم جاپان وارانسی روانہ ہوں گے جو مودی کا پارلیمانی حلقہ انتخاب ہے۔ وہاں وہ گنگا آرتی میں شرکت کریں گے جو مشہور دساشوامید گھاٹ پر منعقد کی جائے گی۔ مودی ایب کے ہمراہ ہوں گے۔ وارانسی کا دورہ تقریباً 4.30 گھنٹے طویل ہوگا۔ وزیراعظم جاپان شام میں نئی دہلی واپس ہوجائیں گے اور اتوار کے دن ان کی وطن واپسی ہوگی۔ وزیراعظم جاپان کے ہمراہ نریندرمودی گذشتہ سال ایوٹو کا دورہ کرچکے ہیں۔ قبل ازیں چوٹی کانفرنس گذشتہ سال ٹوکیو میں منعقد کی گئی تھی۔ دونوں وزرائے اعظم نے اتفاق کیا تھا کہ باہمی تعلقات کو ’’خصوصی و دفاعی و عالمی شراکت داری‘‘ میں تبدیل کردیں گے۔ دونوں قائدین نے دفاع اور دفاعی تعاون کو نئی سطح پر پہنچانے کا بھی عہد کیا تھا اور فیصلہ کیا تھا کہ سیول نیوکلیئر معاہدہ پر بات چیت میں تیز رفتار پیدا کی جائے گی۔ عظیم تر دفاعی آلات اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تعاون سے اتفاق کرتے ہوئے دونوں ممالک نے فیصلہ کیا تھا کہ جاپانی US-2 جل تھلیے طیاروں کی فروخت کے قواعد و ضوابط کا بھی تعین کیا جائے گا۔

مودی ۔ ابے کا آج دورہ وارانسی
وارانسی ۔ 11 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : ہندوستان اور جاپان کے درمیان دیرینہ تعلقات کو نئی جہت عطا کرنے کے لیے وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے جاپانی ہم منصب شہنیزوابے کل یہاں تاریخی مندر کا دورہ کریں گے ۔ جب کہ نریندر مودی کے پارلیمانی حلقہ وارناسی اور جاپانی شہر کیوٹو کے درمیان پارٹنر سٹی معاہدہ کے پیش نظر یہ دورہ اہمیت اختیار کر گیا ۔ اس معاہدہ پر گذشتہ سال اگست میں وزیر اعظم کے دورہ جاپان کے موقع پر دستخط کئے گئے تھے ۔ جاپانی وزیر اعظم 3 روزہ دورہ ہند پر آج پہنچے گے ۔ وہ نریندر مودی کے ہمراہ وارناسی میں گنگا آرتی میں شریک ہوں گے ان کے استقبال کے لیے برقی قمقموں اور موسیقی آلات سے آراستہ ایک شہ نشین تیار کیا گیا ۔ جس کی حفاظت کے لیے فوج اور بحریہ کے اہلکاروں کو متعین کیا گیا ہے ۔ عہد قدیم کا یہ مندر علاقہ سرناتھ سے 15 کلو میٹر دور واقع ہے ۔ جہاں پر مہاتما گوتم بدھ نے پہلی مرتبہ خطاب کیا تھا ۔ یہ خطاب جاپانی عوام کے لیے سرچشمہ وجدان بن گیا ہے ۔ وزیر اعظم نے اپنے ٹوئٹر پر جاپانی وزیر اعظم کو ہندوستان کا عظیم دوست قرار دیا اور کہا کہ ابے شہنیزو کے دورہ ہندوستان دونوں ممالک کے درمیان تعلقات مزید مستحکم ہوجائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT