Saturday , September 22 2018
Home / ہندوستان / وزیراعظم مودی کیخلاف امریکی عدالت میں مقدمہ خارج

وزیراعظم مودی کیخلاف امریکی عدالت میں مقدمہ خارج

نیویارک ، 15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم ہند نریندر مودی کے خلاف گجرات میں 2002ء کے فرقہ وارانہ فسادات میں اُن کے مبینہ رول پر ایک رائٹس گروپ کی جانب سے داخل کردہ مقدمہ کو یہاں کی ایک امریکی عدالت نے خارج کرتے ہوئے اوباما نظم و نسق کے موقف کو حق بجانب قرار دیا ہے کہ وہ بیرونی حکومت کے موجودہ سربراہ کی حیثیت سے استثنا کا حق رکھتے ہیں۔ ن

نیویارک ، 15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم ہند نریندر مودی کے خلاف گجرات میں 2002ء کے فرقہ وارانہ فسادات میں اُن کے مبینہ رول پر ایک رائٹس گروپ کی جانب سے داخل کردہ مقدمہ کو یہاں کی ایک امریکی عدالت نے خارج کرتے ہوئے اوباما نظم و نسق کے موقف کو حق بجانب قرار دیا ہے کہ وہ بیرونی حکومت کے موجودہ سربراہ کی حیثیت سے استثنا کا حق رکھتے ہیں۔ نیویارک کے سدرن ڈسٹرکٹ کی یو ایس ڈسٹرکٹ جج انالیزا ٹوریس نے کل جاری کردہ تین صفحات کے حکمنامہ میں کہا کہ ’’ایگزیکٹیو برانچ کے اختیار کردہ موقف کی روشنی میں کہ وزیراعظم مودی ایک بیرونی حکومت کے موجودہ سربراہ کی حیثیت سے استثنا کے حق دار ہیں، وہ اس مقدمہ میں اس عدالت کے دائرۂ کار سے مستثنیٰ ہیں‘‘۔ انالیزا نے کہا کہ عدالت نے مدعی امریکن جسٹس سنٹر (اے جے سی) کے دلائل پر غور کیا اور ’’انھیں محاسن سے عاری‘‘ اور ’’غیرمتاثرکن‘‘ پایا۔

’’یہ شکایت خارج کی جاتی ہے،‘‘ جج نے اس رولنگ کے ساتھ ہدایت دی کہ یہ کیس بند کردیا جائے۔ اے جی سی نے اس رولنگ پر تبصرہ کی خواہش پر کوئی جواب نہیں دیا۔ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے بھی فوری کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ یہ عدالتی رولنگ ایسے وقت سامنے آئی ہے جبکہ مودی ، صدر براک اوباما کی میزبانی کیلئے تیاری کررہے ہیں، جو 26 جنوری کو ہندوستان کی یوم جمہوریہ تقاریب میں مہمان خصوصی ہوں گے۔ یہ مقدمہ نیویارک نشین اے جے سی نے گزشتہ سال ستمبر میں دائر کیا تھا، جس کے چند روز بعد مودی بحیثیت وزیراعظم اپنے پہلے دورہ پر امریکہ پہنچے تھے تاکہ اقوام متحدہ جنرل اسمبلی سیشن میں شرکت کرسکیں اور اوباما کے ساتھ واشنگٹن میں میٹنگ منعقد کریں۔

TOPPOPULARRECENT