Thursday , January 17 2019

وزیراعظم نریندر مودی کا سونیا گاندھی پر ’’قطروچی ماما‘‘ کہہ کر طنز

رائے بریلی ۔ (یو پی) /16 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج سونیا گاندھی پر یہ کہہ کر طنز کیا کہ کانگریس پارٹی محض ’’قطروچی انکل ‘‘ یا ’’کرسچین مائیکل ‘‘ کی غیر موجودگی کے باعث رافیل سودے بازی میں شک و شبہات پیدا کررہی ہے ۔ حالانکہ یہ سودے بازی بہت ہی شفاف طریقہ سے انجام دی گئی ہیں اور کانگریس اپنے بیانات سے عدلیہ میں عدم اعتمادی پیدا کررہی ہیں ۔ سپریم کورٹ کی جانب سے دیئے گئے بیان کہ سودی بازی میں شفافیت برتی گئی ہے ۔ کے بعد وزیراعظم نے بیان دیا ۔ اس کے علاوہ مدھیہ پردیش ، راجستھان اور چھتیس گڑھ میں بی جے پی کی شکست کے بعد یہ ان کا پہلا دورہ رائے بریلی تھا ۔ وزیراعظم نے کانگریس پر راست حملہ کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی بعض ایسے عناصر کے ساتھ ساز باز کررہی ہے جو ہندوستانی فورسیس کو طاقتور ہوتے دیکھنا نہیں چاہتی اور ہندوستان کو فی الوقت دو رخی چیلنجس کا سامنا ہے ۔ ایک تو وہ فرنٹ جو ملک کو طاقتور بنانا چاہتا ہے تاکہ بیرونی خطرات سے نمٹ سکے اور دوسرا فرنٹ ملک کو ہر طرح سے کمزور بنانے پر کمربستہ ہے اور عوام بخوبی جانتے ہیں کہ کانگریس ان عناصر کے ساتھ ٹھہری ہوئی ہے جو چاہتے ہیں کہ ملک کمزور بن جائے ۔ مودی نے رام چرت ماناس سے اخذ کردہ ایک شعر بھی دہرایا کہ ’’کچھ لوگ ایسے ہوتے ہیں جو صرف جھوٹ کو قبول کرتے ہیں اور پھر اس کو دوسرے لوگوں تک پہنچاتے ہیں ‘‘

اور یہی وہ لوگ ہیں جو وزارت دفاع ، انڈین ایرفورس آفسس ، حکومت فرانس سب کو جھوٹا قرار دیتے ہیں اور اب حد یہ ہے کہ سپریم کورٹ میں بھی وہ شکوک و شبہات پیدا کردیئے ہیں ۔ مودی اپنی پچاس منٹ کی تقریر میں 30 منٹ صرف رافیل سودے بازی پر بیان بازی میں صرف کئے ۔ پچھلے کانگریس کے وقت میں کی گئی سودے بازی مکمل طور پر داغدار تھی اور کانگریس کی تاریخ شاہد ہے کہ جتنے بھی سودے بازیاں کی گئیں وہ (اطالوی تاجر اوٹاویو) قطروچی ماما کے ذریعہ میں طئے پائیں ۔ 1986 ء میں کی گئی بوفورس سودے بازی جو راجیو گاندھی نے کی تھی وہ سودے بازی کے درمیانی شخص قطروچی ہی تھے ۔ جہاں تک آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر کا معاملہ ہے ہم نے گزشتہ کچھ دن پہلے کرسچن مائیکل کو پکڑ کر ہندوستان لایا ہے ۔ 54 سالہ مائیکل برطانوی شہری ہے جو تین درمیانی اشخاص میں سے ایک ہے جس کو سی بی آئی نے 3600 کروڑ روپئے کی آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے میں ہندوستانی سیاستدانوں کی جانب سے رشوت طلبی میں ملوث رہا ہے ۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہر کوئی دیکھ رہا ہے کہ کس طرح سے کانگریس اس شخص کو بچانے کیلئے کوشاں ہے اور اس کے دفاع کیلئے کانگریس کی جانب سے ایک وکیل کو بھی ٹھہرایا گیا ہے ۔ میں کانگریس سے دریافت کرنا چاہتا ہوں کہ وہ رافیل سودے بازی میں کیوں شکوک و شبہات پیدا کررہی ہیں ۔ شائد اس لئے کہ اس میں قطروچی ماما یا کرسچن مائیکل موجود نہیں ہیں ۔ یہی وجہ ہے کہ کانگریس عدلیہ میں اپنا بھروسہ کھو دی ہے ۔ وزیراعظم نے کہا کہ کارگل جنگ کے بعد ہماری فوج کیلئے کوئی بھی بہترین لڑکا طیارے میں موجود نہیں ہیں ۔

کانگریس دس سال تک ملک پر حکمرانی کی ہے لیکن ایرفورس کو طاقتو ر بنانے کیلئے کوئی بھی اقدام نہیں اٹھایا ۔ کیوں ؟ کیا کوئی دوسرے ملک کا دباؤ موجود ہے ۔ اس کے علاوہ کانگریس نے فوج کو بلٹ پروف جیاکٹس بھی فراہم نہیں کی ۔ 2009 ء سے آرمی نے 1.86 لاکھ بلٹ پروف جیاکٹس فراہم کرنے کا مطالبہ کیا تھا لیکن یو پی اے ۔ II کے دور میں یہ نہیں خریدی گئیں ۔ لیکن بی جے پی اقتدار میں آتے ہی 2016 ء میں پچاس ہزار بلٹ پروف جیاکٹس خرید کر افواج کے حوالے کیں اور حالیہ دنوں میں حکومت نے ایک خانگی کمپنی کو 1.86 لاکھ بلٹ پروف جیکٹس تیار کرنے کا آرڈر دیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT