Friday , December 15 2017
Home / سیاسیات / وزیراعظم نریندر مودی کی ڈگری کا تنازعہ

وزیراعظم نریندر مودی کی ڈگری کا تنازعہ

سنٹرل انفارمیشن کمیشن اور چیف منسٹر دہلی کو عدالت کی نوٹس
احمد آباد۔20 جون (سیاست ڈاٹ کام) گجرات ہائی کورٹ نے آج سنٹرل افارمیشن کمیشن اور ارویند کجریوال کو گجرات یونیورسٹی کی ایک عرضی پر نوٹس جاری کی ہے جبکہ وزیر اعظم نریندر مودی کی ڈگری کے بارے میں اطلاعات چیف منسٹر دہلی کو رفراہم کرنے سے متعلق سنٹرل افارمیشن کمیشن کے احکامات کے خلاف یہ عرضی داخل کی گئی ہے جس میں ٹیکنیکی بنیادوں پر سی آئی سی کے احکامات کا لعدم قرار دینے کی استدعا کی گئی ہے۔ جسٹس ایس ایم وہرا نے سنٹرل افارمیشن کمشنر ایم سریدھر آچاریولو اور کجریوال کو نوٹس جاری کرتے ہوئے آئندہ ماہ سماعت تک اپنا جواب داخل کرنے کی ہدایت دی ہے۔ ہائی کورٹ میں پیش کردہ عرضی میں گجرات یونیورسٹی نے مطلع کیا کہ انفارمیشن کمیشن کی کسی بھی کارروائی کے لئے یونیورسٹی کو فریق نہیں بنایا جاسکتا لیکن اس کے احکامات گجرات یونیورسٹی کے مفادات پر کاری ضرب لگاسکتے ہیں۔ یونیورسٹی نے یہ بھی استدلال پیش کیا کہ سنٹرل انفارمیشن کمیشن کے اختیارات محدود ہیں جس کا اطلاق یونیورسٹی پر نہیں ہوسکتا۔ لہٰذا سی آئی سی کے احکامات کو کالعدم کردینے کی ضرورت ہے۔ واضح رہے کہ وزیراعظم نریندر مودی کی تعلیمی ڈگریوں پر اس وقت تنازعہ پیدا ہوگیا جب تعلیمی اداروں کی جانب سے جاری کردہ اسنادات پر تضاد پایا گیا اور چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے باقاعدہ مہم چلاتے ہوئے وزیراعظم کی تعلیمی لیاقت پر سوال کھڑا کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT