Tuesday , December 12 2017
Home / سیاسیات / وزیراعظم نے ارون جیٹلی کو مستعفی ہونے کا اشارہ دیدیا

وزیراعظم نے ارون جیٹلی کو مستعفی ہونے کا اشارہ دیدیا

BJP Leader LK Advani with Narendra Modi and Arun Jaitley during the parliamentary board Meeting at BJP OFFICE ON 18th July 2013. Express photo by Renuka Puri.

غلام نبی آزاد اورسی پی آئی ایم قائد یچوری کا ادعاء، وزیراعظم اور بی جے پی کی جانب سے جیٹلی کی تائید
نئی دہلی ۔ 22 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) اپوزیشن نے آج دعویٰ کیا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے وزیر فینانس ارون جیٹلی کو مستعفی ہونے کا اشارہ دیا ہے جبکہ ڈی ڈی سی اے تنازعہ ایل کے اڈوانی کے حوالہ مقدمہ کے مماثل ہورہا ہے۔ قائد اپوزیشن راجیہ سبھا غلام نبی آزاد نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ انہوں نے آج سناہے کہ ایل کے اڈوانی کے جین حوالہ مقدمہ کے مماثل ایک مقدمہ میں جیٹلی بھی بری طرح پھنس گئے ہیں اور جیسا کہ اس وقت اڈوانی نے اپنے عہدہ سے استعفیٰ دیدیا تھا اور سپریم کورٹ کی جانب سے بے قصور قرار دیئے جانے کے باوجود اپنے عہدہ پر واپس نہیں آچکے تھے۔ وزیراعظم نریندر مودی نے موجودہ وزیر فینانس ارون جیٹلی کو بھی اشارہ دیدیا ہے کہ انہیں اپنے عہدہ سے مستعفی ہوجانا چاہئے ۔ قبل ازیں سی پی آئی ایم کے جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری نے بھی ادعا کیا تھا کہ وزیراعظم وزیر فینانس کو اپنے عہدہ سے مستعفی ہونے کا اشارہ دے چکے ہیں لیکن وزیراعظم نریندر مو دی نے آج کہا کہ وزیر فینانس ان پر عائد کرپشن کے الزامات بے بنیاد ثابت ہونے پر سرخرو ہوجائیں گے جب کہ بی جے پی نے کہا کہ اڈوانی کے خلاف حوالہ مقدمہ اور ڈی ڈی سی اے کے معاملہ میں ارون جیٹلی کے خلاف کرپشن کے الزامات کو مماثل قرار نہیں دیا جاسکتا۔

TOPPOPULARRECENT