Wednesday , November 22 2017
Home / سیاسیات / وزیراعظم کے صرف وعدے، عمل ندارد، اقتدار ضرورت سے زیادہ مرکوز

وزیراعظم کے صرف وعدے، عمل ندارد، اقتدار ضرورت سے زیادہ مرکوز

بی جے پی میں صرف ایک ہی شخص کو بولنے، خاموش رہنے، وعدے کرنے اور وعدے توڑنے کی اجازت : راہول گاندھی
جموں ۔ 26 اگست (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے آج کہا کہ مرکزی حکومت میں اقتدار ضرورت سے زیادہ مرکوز ہوچکا ہے، جس کے نتیجہ میں سارے انتظامی نظام کی کارکردگی متاثر ہورہی ہے اور یہ الزام بھی عائد کیا کہ وزیراعظم نریندر مودی وعدوں کی تکمیل نہیں کررہے ہیں۔ راہول گاندھی نے کہا کہ ’’اس حکومت میں سب سے بڑا مسئلہ یہ ہے کہ وہ (حکومت) سمجھتی ہے کہ صرف مودی جی کو ہی تمام معلومات ہیں۔ صرف وہ (مودی) ہی سب کچھ جانتے ہیں ۔ خواہ وہ پنجاب ہوکہ ہریانہ یا جموں کشمیر ہو کہ ایک شخص ایک وظیفہ کا مسئلہ ہو۔ ان تمام مسائل پر صرف مودی جی کو ہی معلومات حاصل ہیں۔ چنانچہ اب ہر کوئی یہ دیکھنے کا منتظر ہے کہ اب وہ (مودی) کیا کریں گے‘‘۔ راہول گاندھی نے مزید کہا کہ ’’اقتدار ضرورت سے زیادہ مرکوز ہوگیا ہے اور مودی کچھ نہیں کہہ رہے ہیں۔ چنانچہ سارا نظام حکومت ٹھپ ہوگیا ہے‘‘۔

راہول گاندھی سے اخباری نمائندوں نے این ایس اے سطح پر بات چیت کی منسوخی کے بارے میں سوال کیا تھا۔ راہول گاندھی نے کہا کہ لک میں بے پناہ صلاحیتیں موجود ہیں۔ وزارت خارجہ و فینانس میں، حکومت کے اندر اور باہر حتیٰ کہ پیشہ ورانہ شعبوں میں کئی قابل افراد ہیں جو اپنا کام سمجھتے ہیں اور جانتے ہیں کہ کس طرح کام کیا جائے۔ راہول گاندھی نے کہا کہ ’’ملک میں کوئی بھی شخص بگڑتی ہوئی معیشت کو دیکھ سکتا ہے اور اب آپ نے دیکھ لیا کہ مارکٹ کا کیا حال ہوا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’وزیراعظم نے ایک رتبہ ۔ ایک وظیفہ کا وعدہ کیا لیکن سابق فوجی بھوک ہڑتال پر ہیں‘‘۔ راہول گاندھی نے کہا کہ ’’وزیراعظم نے وعدے تو بہت کئے اور ہر کوئی ان کے وعدوں کو خوب جانتا ہے لیکن اب وقت آ گیا ہے کہ وزیراعظم محض وعدے کرنے کے بجائے کچھ کام کریں۔ رشوت پر کنٹرول کا وعدہ کیا ہوا؟ للت مودی کے بینک کھاتوں سے عوام کے کھاتوں میں 15 لاکھ روپئے جمع کرنے کے وعدے کہاں گئے۔ یہ اب تک تو نہیں کیا گیا۔ چنانچہ انہیں (مودی کو) چاہئے کہ اب وہ اپنے وعدوں کی تکمیل کیلئے عملی اقدامات کا آغاز کریں‘‘۔ کانگریس کے نائب صدر نے الزام عائد کیا کہ نریندر مودی ایک بعد کے دیگر وعدوں پر وعدے کئے جارہے ہیں لیکن غالباً یہ پہلا موقع ہیکہ ملک کیلئے لڑنے اور اپنی جانیں قربان کرنے والے سابق فوجی اب بھوک ہڑتال کررہے ہیں اور وزیراعظم بدستور خاموش ہیں‘‘۔ راہول گاندھی نے کہا کہ اپنے مخالفین بی جے پی کے برخلاف ہم عوام کو بولنے دینے پر یقین رکھتے ہیں لیکن بی جے پی میں صرف ایک شخص کو بولنے کی اجازت ہے۔ ایک ہی شخص کو خاموش رہنے کی اجازت ہے۔ ایک ہی شخص کو وعدے کرنے کی اجازت ہے اور اس شخص واحد کو ہی وعدے توڑنے کی اجازت بھی ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT