Monday , December 11 2017
Home / سیاسیات / وزیر اعظم مودی کی ڈگری ’ درست ‘ دہلی یونیورسٹی رجسٹرار

وزیر اعظم مودی کی ڈگری ’ درست ‘ دہلی یونیورسٹی رجسٹرار

مارک شیٹ میں غلطیاں معمولی نوعیت کی ۔ رجسٹرار مرکز کے دباؤ میں ۔ عام آدمی پارٹی کا الزام
نئی دہلی 10 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) مبینہ بے قاعدگیوں کی تردید کرتے ہوئے دہلی یونیورسٹی نے آج کہا کہ وزیراعظم نریندرمودی بی اے کی ڈگری رکھتے ہیں جو بی جے پی کی جانب سے دکھائی جا رہی ہے ۔ یونیورسٹی کا کہنا ہے کہ مودی کی یہ ڈگری مصدقہ ہے اور ان کے گریجویشن سے متعلق تمام ریکارڈز موجود ہیں۔ یونیورسٹی نے کہا کہ ان کے ڈگری پاس کرنے کے سال کو 1979 درج کرنا ایک معمولی غلطی ہے جبکہ انہوں نے یہ کامیابی 1978 میں حاصل کی تھی ۔ دہلی یونیورسٹکی کے رجسٹرار ترون داس نے یہ وضاحت ایسے وقت میں کی ہے جبکہ وزیر اعظم کی ڈگری کے تعلق سے تنازعہ چل رہا ہے اور عام آدمی پارٹی کا مسلسل الزام ہے کہ یہ ڈگری درست نہیں ہوسکتی ۔ رجسٹرار یونیورسٹی کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنے ریکارڈز چیک کئے ہیں اور یہ توثیق کی جاتی ہے کہ وزیر اعظم نریندرمودی نے بی اے کیا تھا اور ان کی ڈگری مصدقہ ہے ۔ انہوں نے 1978 میں یہ کامیابی حاصل کی تھی

 

اور انہیں 1979 میں یہ ڈگری دی گئی ہے ۔ عام آدمی پارٹی نے یونیورسٹی کا دورہ کرتے ہوئے اس تعلق سے معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی تھی ۔ عام آدمی پارٹی کی جانب سے اس ڈگری میں کئی غلطیوں کے ادعا کے تعلق سے انہوں نے کہا کہ دو مارک شیٹس میں نام میں ہوئی غلطیوں کا بھی یونیورسٹی کے ریکارڈ میں تذکرہ موجود ہے ۔ مودی کے نام میں بدلاؤ کے تعلق سے سوال پر انہوں نے کہا کہ مارک شیٹ میں درمیانی نام میں جو غلطیاں ہوئی ہیں وہ عام بات ہیں اور معمولی غلطیاں ہیں۔ دوسرے طلبا نے بھی ایسی غلطیوں کی نشاندہی کی تھی اور ان کے درخواست کرنے پر ایسی غلطیوں کو دور کیا جاتا ہے ۔ اس دوران عام آدمی پارٹی نے الزام عائد کیا کہ دہلی یونیورسٹی کے رجسٹرار ترون داس مرکزی حکومت کے دباؤ میں ہیں۔ آج انہوں نے ہی مودی کی ڈگری درست ہونے کی توثیق کی تھی ۔ عام آدمی پارٹی کے لیڈر آشوتوش نے کہا کہ ہم یونیورسٹی گئے تھے اور وائس چانسلر و رجسٹرار سے ملنا چاہتے تھے لیکن دونوں نے ہم سے ملاقات کرنے سے انکار کردیا تھا ۔ یہ سب کچھ دباؤ کی وجہ سے ہے ۔ یہ بات سمجھ میں آگئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT