Tuesday , June 19 2018
Home / Top Stories / وزیر اعظم کی قیامگاہ تک مارچ کرنے تلگودیشم ایم پیز کی کوشش

وزیر اعظم کی قیامگاہ تک مارچ کرنے تلگودیشم ایم پیز کی کوشش

پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ حکومت کے رویہ پر ارکان کی برہمی ۔ اروند کجریوال نے پولیس اسٹیشن پہونچ کر ملاقات کی

حیدرآباد۔ 8 اپریل (سیاست نیوز) آندھرا پردیش کے ساتھ انصاف کے مطالبہ پر تلگو دیشم 21 ارکان لوک سبھا نے دہلی میں اپنی جدوجہد میں شدت پیدا کی اور آج اچانک غیرمعمولی اقدام میں انہوں نے وزیراعظم نریندر مودی کی رہائش کا محاصرہ کرنے کی کوشش کی ۔ پارٹی ذرائع کے مطابق آج صبح سابق مرکزی وزیر و سوجنا چودھری کی قیام گاہ پر تمام ارکان پارلیمان اکٹھا ہوئے اور آئندہ کے احتجاجی لائحہ عمل پر غور کرکے اچانک ریالی کی شکل میں وزیراعظم کی رہائش گاہ کا گھیراؤ کرنے نکل پڑے۔ احتجاجی اپنے ہاتھوں میں آندھرا پردیش کے ساتھ انصاف کے مطالبہ پر مشتمل پلے کارڈز تھامے نعرہ بازی کررہے تھے۔ احتجاجیوں نے انصاف کرنے اور تقسیم ریاست کے موقع پر دیئے گئے تیقنات پر عمل آوری کا مطالبہ کرتے ہوئے نعرہ بازی کی۔ اسی دوران پولیس کے بھاری دستوں نے وہاں پہنچ کر احتجاجی ارکان کو آگے بڑھنے سے روکنے کی کوشش کی جس پر صورتحال کسی قدر کشیدہ ہوگئی اور احتجاجی ارکان وزیراعظم کی قیام گاہ کے قریب سڑک پر ہی بیٹھ گئے لیکن پولیس فورس نے ارکان کو گھسیٹتے ہوئے ہاتھ پیر پکڑ کر پولیس کی گاڑیوں میں منتقل کردیا جس کی وجہ سے چند ارکان پارلیمان کو معمولی زخم بھی آئے۔ اسی دوران احتجاجی ارکان نے پرامن احتجاج کا مظاہرہ کرنے پر کیوں گرفتار کیا گیااس کی وضاحت کرنے پر زور دیا۔ ارکان نے مرکزی حکومت پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ارکان پارلیمان کا لحاظ نہ رکھتے ہوئے انہیں گرفتار کرنا حکومت کی زیادتی ہے اور یہ حکومت کی ناکامی کا ثبوت ہے۔ احتجاجی ایم پیز نے وزیراعظم پر آمرانہ طرز عمل احتیار کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ پارلیمنٹ میں ان کے احتجاج پر کوئی توجہ نہ دے کر انہیں نظرانداز کردیا گیا۔

وہ آندھرا پردیش کیلئے حکومت خصوصی موقف حاصل کرکے ہی چین کی سانس لیں گے۔ 20 ارکان پارلیمنٹ کو دہلی پولیس کی بس میں تغلق روڈ پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا اور وہاں انہیں حراست میں رکھا گیا ۔ چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال اطلاع ملنے پر فوری تغلق روڈ پولیس اسٹیشن پہونچے اور انہوں نے ان ارکان پارلیمنٹ سے اظہار یگانگت کیا ۔ کجریوال نے کہا کہ یہ ایم پیز وزیر اعظم سے ملاقات کیلے گئے تھے اس کی بجائے وزیر اعظم نے انہیں پولیس اسٹیشن بھیج دیا ۔ دہلی پولیس کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ ہم نے وزیر اعظم کی قیامگاہ کی سمت مارچ کرنے والے 21 ایم پیز کو گرفتار کیا ہے اور ایک بجے دن انہیں رہا کردیا گیا ۔ تلگودیشم ایم پی جئے دیو گلا نے کہا کہ وزیر اعظم وہ شخص ہیں جو آندھرا پردیش کیلئے خصوصی موقف پر فیصلہ کرسکتے ہیں۔ انہیں اپنے وعدوں کو پورا کرنا چاہئے اور ہم اپنے مطالبات پیش کرنے ان سے ملاقات کرنا چاہتے تھے ۔ تلگودیشم ایم پیز نے وائی ایس آر کانگریس ایم پیز کے استعفوں کو سیاسی ڈرامہ سے تعبیر کیا اور استفسار کیا کہ جب ارکان لوک سبھا مستعفی ہوگئے تو ارکان راجیہ سبھاسے کیوں استعفے پیش نہیں کروائے گئے ۔ انہوں نے وزیراعظم کے دفتر کے اطراف گھومنے اور صدر پارٹی جگن موہن ریڈی کے خلاف کیسیس کو ختم کروانے ان ارکان راجیہ سبھاسے استعفیٰ نہیں دلوائے گئے۔ تلگو دیشم ارکان پارلیمان نے کہا کہ خواہ وہ کتنی ہی کوششیں کریں، بہرصورت کسی بھی طرح جگن موہن ریڈی کا جیل جانا طئے ہے۔

TOPPOPULARRECENT