Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / وزیر برقی جگدیش ریڈی کو برطرف کرنے کانگریس کا مطالبہ

وزیر برقی جگدیش ریڈی کو برطرف کرنے کانگریس کا مطالبہ

حیدرآباد۔ 12 اپریل (سیاست نیوز) ترجمان اعلیٰ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی ڈاکٹر ڈی شراون نے 150 کروڑ روپئے کے اراضی اسکام میں ملوث رہنے والے وزیر برقی جگدیش ریڈی کو وزارت سے برطرف کرنے کا چیف منسٹر کے سی آر سے مطالبہ کیا۔ آج شام گاندھی بھون میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 250 ایکر سرکاری اراضی دستیاب رہنے کے باوجود وزیر برقی جگدیش ریڈی نے اس اراضی پر سوریہ پیٹ کلکٹریٹ آفس تعمیر کرنے کے بجائے خانگی اراضی خریدتے ہوئے کلکٹریٹ آفس تعمیر کرنے کو ترجیح دی ہے۔ سری سائی ڈیولپرس سے فی ایکر 18 لاکھ روپئے اراضی خریدی گئی ہے۔ اس اراضی کے آس پاس موجود مزید 150 ایکر اراضی کو پلاٹس بناکر فروخت کرتے ہوئے تجارت کی گئی ہے جس میں ریاستی وزیر جگدیش ریڈی نے این آر آئی سیدی ریڈی کو بے نامی بناتے ہوئے ان کے ذریعہ 20% حصہ حاصل کیا ہے جو بہت بڑا اراضی اسکام ہے۔ ڈاکٹر شراون نے کہا کہ جگدیش ریڈی کینیڈا کے این آر آئی سیدی ریڈی کو بے نامی بناکر پہلے بھی کئی بے قاعدگیاں کی ہیں۔ کامکثی انجینئرنگ کالج کو 8 کروڑ روپئے میں سیدی ریڈی کو بے نامی بناکر خریدتے ہوئے اس کو ماہانہ 80 ہزار روپئے کے کرایہ پر کلکٹریٹ آفس کیلئے حکومت کو کرایہ پر دیا۔ اس کے علاوہ کلکٹریٹ آفس کی نئی عمارت کی تعمیرات میں بھی وزیر برقی کو 20% کا حصہ حاصل ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کو جگدیش ریڈی کی بدعنوانیاں نظر نہیں آرہی ہیں۔ راجیا کا تعلق ایس سی طبقہ سے تھا لہذا بدعنوانیوں کے الزام عائد کرتے ہوئے انہیں ڈپٹی چیف منسٹر کے عہدہ سے برطرف کردیا گیا۔ وزیر برقی کا تعلق اعلیٰ طبقہ سے ہے جس کی وجہ سے ان کی بدعنوانیوں کو نظرانداز کیا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT