Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / وزیر خارجہ امریکہ کی خلیج کے بحران کی یکسوئی کیلئے تازہ کوشش

وزیر خارجہ امریکہ کی خلیج کے بحران کی یکسوئی کیلئے تازہ کوشش

قطر اور سعودی عرب کے دارالحکومتوں کا دورہ ‘ کسی کارنامہ کی توقع نہیں ‘ ہندوستان کے دورہ کا بھی پروگرام

ریاض۔22اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام) وزیرخارجہ امریکہ ریکس ٹلرسن اتوار کے دن خلیج کے بحران کی یکسوئی کیلئے اپنی تازہ کوشش کا آغاز کریں گے ۔ وہ سعودی عرب اور قطر کے درمیان ثالثی کی کوشش کرنا چاہتے ہیں ۔ دونوں ممالک امریکہ کے حلیف ہیں لیکن انہیں کسی کارنامے کی توقع نہیں ہے ۔ ایک مہینہ طویل بحران کے دوران ایران کا اثر و رسوخ مشرق وسطی میں بڑھتا جارہا ہے اور وہ تیل کی دولت سے مالا مال ایجنڈے کے ساتھ ایک بااثر طاقت بن کر ابھر رہا ہے ۔ امریکہ کے اعلیٰ سطحی سفارت کار دونوں ممالک کے دارالحکومتوں کا دورہ کر کے خلیجی بحران کی یکسوئی کی کوشش کریں گے ۔ سعودی عرب ‘ بحرین ‘ متحدہ عرب امارات اور مصر نے قطر کے ساتھ تعلقات منقطع کرلئے ہیں اور جون میں اُس پر تحدیدات عائد کی ہیں ۔ ان ممالک کا الزام ہے کہ قطر دہشت گردی کی تائید کررہا ہے اور ایران کے ساتھ قربت اختیار کررہا ہے ۔

حکومت قطر نے ان الزامات کی تردید کی ہے اور کسی بھی تصفیح کیلئے کسی بھی قسم کی شرائط مسترد کردی ہیں ۔ صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے ابتداء میں قطر کو الگ تھلگ کرنے کی کوشش کی تائید کی تھی ۔ انہوں نے ثالثی کا پیشکش کیا ہے اور حال ہی میں بحران کے تیز رفتار خاتمہ کی پیش قیاسی کی ہے لیکن ریاض پہنچنے سے پہلے ٹلرسن نے اشارہ دیا ہے کہ بہت کم پیشرفت ہوئی ہے ۔ خلیجی تنازعہ اور ایران سے قطع نظر یمن اور انسداددہشت گردی کارروائی بھی بات چیت کا موضوع رہے گی ۔ سعودی عرب نے ٹلرسن سعودی ۔ عراق رابطہ کونسل کے اولین اجلاس میں شرکت کریں گے ۔ وزیراعظم عراق حیدرالعبادی ایک اعلیٰ سطحی وزارتی وفد کی قیادت کرتے ہوئے اجلاس میں شرکت کریں گے ۔ یہ سعودی عرب اور ایران کے زیراثر شیعہ اکثریتی ملک عراق کے درمیان تعلقات میں اضافہ کی نشانی ہے ۔ وزیراعظم سعودی عرب عادل الجبیر کے ساتھ ظہرانہ کے بعد ٹلرسن دیگر سعودی قائدین سے آج ملاقات کریں گے اور قطر روانہ ہوں جائیں گے ۔ اپنے دورہ میں ٹلرسن کا دورہ ہند بھی شامل ہے جس کا مقصد 100سالہ دفاعی شراکت داری ہندوستان کے ساتھ شروع کرنا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT