Saturday , November 25 2017
Home / دنیا / وسطی امریکہ میں زبردست برقی سربراہی کی ناکامی

وسطی امریکہ میں زبردست برقی سربراہی کی ناکامی

ہیکنگ کی مہم سے امریکہ کی نیوکلیئر صنعت غیر متاثر ہونے کا ادعا

سان جوس ۔2جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) بڑے پیمانے پر وسطی امریکہ میں برقی سربراہی کی ناکامی کی وجہ سے لاکھوں افراد اندھیرے میں غرق ہوگئے ۔ پناما سے کوسٹاریکا تک اور وہاں سے ایل سالویڈار تک بڑے پیمانے پر برقی سربراہی ناکام ہوگئی ۔ محکمہ برقی سربراہی سے متعلق عہدیدار برقی سربراہی بحال کرنے کی سخت جدوجہد کے باوجود اسے بحال کرنے میں ناکام رہے ۔ صرف کوسٹکاریکا کے تقریباً 50لاکھ افراد برقی سربراہی کی ناکامی سے متاثر ہوئے ۔ برقی سربراہی کی ناکامی تقریباً پانچ گھنٹے جاری رہی جس کے بعد اسے بمشکل بحال کیا جاسکا ۔ عہدیداروں نے کہا کہ برقی سربراہی کی ناکامی پناما کی ترسیلی لائن پر منفی اثرات مرتب ہونے کی وجہ سے اس علاقہ کو برقی سربراہی متاثر ہوئی ۔ اس علاقہ کے تمام ممالک گوٹے مالا سے پناما تک ایک ہی برقی توانائی گریڈ سے وابستہ ہیں ۔ یہ گریڈ تقریباً 1800کلومیٹر میٹر کے فاصلہ تک برقی سربراہی کا ذمہ دار ہے ‘ لیکن وسطی امریکہ اس برقی توانائی گریڈ کی ناقص کارکردگی کے اعتبار سے بیحد مخدوش ہے ۔

واشنگٹن سے موصولہ اطلاع کے بموجب محکمہ نیوکلیئر توانائی اور برقی توانائی کے محکموں نے کہا کہ ہیکنگ کی مہم سے نیوکلئیر صنعت غیر متاثر رہی ۔ مرکزی عہدیداروں کے بموجب کل مرکزی عہدیداروں نے اس بات کا تیقن دیا تھا کہ برقی توانائی کے گریڈ آپریٹرس ہیکنگ کا شکار ہوگئے ہیں ۔ کیونکہ برقی توانائی کی پیداوار کے شعبہ کو ہیکنگ کی مہم کا نشانہ بنایا گیا ہے ۔ نیوکلیئر توانائی کی صنعت کے ترجمان جان کیولی نے کہا کہ امریکہ میں کارکرد کوئی بھی ری ایکٹر اس مہم سے متاثر نہیں ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کوئی ری ایکٹر متاثر بھی ہوا ہو تو نیوکلئیر ریگولیٹری کمیٹی کو اس کی اطلاع نہیں دی گئی ۔ انہوں نے مزید تبصرہ کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ یہ رازداری کا معاملہ ہے ۔ چنانچہ وہ اس سے زیادہ تفصیلات کا انکشاف نہیں کرسکتے ۔ فوج کے ایگزیکٹیو ڈائرکٹر برائے ایڈیسن الکٹرک ادارہ نے کہا کہ پاؤر گریڈ کو کنٹرول کرنے والے نظاموں پر اس کا کوئی اثر مرتب نہیں ہوا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT