Thursday , October 18 2018
Home / ہندوستان / وشوا ہندو پریشد رام مندر کیلئے قانون سازی پر اتفاق رائے کی خواہاں

وشوا ہندو پریشد رام مندر کیلئے قانون سازی پر اتفاق رائے کی خواہاں

ترونل ویدی (ٹاملناڈو) ۔ 12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) وشوا ہندو پریشد نے آج مرکز پر زور دیا کہ وہ ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کیلئے قانون سازی پر اتفاق رائے پیدا کرے۔ اس نے امید ظاہر کی کہ اس معاملہ پر مقدمہ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں زیرالتواء ہے اور فیصلہ آئندہ 6 ماہ کے دوران آجائے گا۔ صدر وی ایچ پی سداشیو کوکجے نے کہا کہ بی جے پی اپنے بل بوتے پر قانون سازی نہیں کرسکتی کیونکہ اسے راجیہ سبھا میں اکثریت حاصل نہیں ہے لیکن ہمیں 31 جنوری کی قطعی آخری مہلت کا تعین کرنا ہوگا کیونکہ جب تم فبروری 19 ء الہ آباد میں کمبھ میلے کا مقدس دن ہے اور اس دن پارلیمنٹ میں قانون سازی کی جاسکتی ہے۔ کوکجے ترونل ویلی میں تعمیرا بہارانی مہاپشکرم تہوار کے سلسلہ میں ٹاملناڈو کے دورہ پر ہیں۔ وہ اخباری نمائندوں کے ایک سوال کا جواب دے رہے تھے جنہوں نے بی جے پی کی جانب سے مندر کی تعمیر کے تیقن کے بارے میں سوال کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں یقین ہیکہ عدالت کا فیصلہ ہندوؤں کی تائید میں ہوگا۔ وی ایچ پی رام مندر کیلئے تحریک 1984ء سے چلارہی ہے اور طویل قانونی جنگ کے بعد الہ آباد ہائیکورٹ نے اپنا فیصلہ سنایا تھا۔

TOPPOPULARRECENT