Sunday , January 21 2018
Home / شہر کی خبریں / وقار احمد اور دیگر چار کا نقلی انکاونٹر کرنے کا پولیس پر الزام

وقار احمد اور دیگر چار کا نقلی انکاونٹر کرنے کا پولیس پر الزام

آلیر پولیس اسٹیشن میں وقار احمد کے والد کی شکایت ، ضروری کارروائی پر زور

آلیر پولیس اسٹیشن میں وقار احمد کے والد کی شکایت ، ضروری کارروائی پر زور

حیدرآباد ۔ 12۔ اپریل : ( پی ٹی آئی ) : وقار احمد عرف علی خان کے والد نے آج نلگنڈہ پولیس میں ایک شکایت درج کرواتے ہوئے الزام عائد کیا کہ اسکارٹ پارٹی اور پولیس کے اعلیٰ عہدیداروں نے 7 اپریل کو ایک نقلی انکاونٹر میں ان کے فرزند اور دیگر چار کو ہلاک کردیا ۔ جناب محمد احمد نے آلیر پولیس اسٹیشن میں یہ شکایت درج کروائی اور ضروری کارروائی شروع کرنے پر زور دیا ۔ پولیس کے ایک عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ آلیر پولیس اسٹیشن کے سب انسپکٹر پی راگھویندر نے پی ٹی آئی کو بتایا کہ اس شکایت کے بعد ایک جنرل ڈائر ( جی ڈی ) انٹری کی گئی ۔ کوئی کیس درج نہیں کیا گیا کیوں کہ اس سلسلہ میں قانونی رایء طلب کی گئی ہے ۔ مسٹر احمد نے قبل ازیں وقار اور ان کے چار ساتھیوں کی ہلاکت کو ’ پولیس قتل ‘ قرار دیا تھا ۔ زیر دوران مقدمہ کے پانچ افراد ، وقار ، سید
امجد علی ، محمد ذاکر ، تینوں ساکن حیدرآباد ، محمد حنیف عرف ڈاکٹر حنیف ، متوطن احمد آباد اور اظہار خان متوطن اترپردیش کو 7 اپریل کو اس وقت پولیس کی جانب سے گولی مار دی گئی جب انہوں نے مبینہ طور پر آلیر پولیس اسٹیشن حدود میں ٹنگٹور کے قریب ایک پولیس ویان سے فرار ہونے کی کوشش کی تھی جب کہ انہیں عدالت میں پیش کرنے کے لیے حیدرآباد لے جایا جارہا تھا ۔ پولیس کے مطابق وقار احمد نے رفع حاجت کے لیے ویان روکنے کے لیے کہا ویان میں واپس ہونے کے بعد اس نے ایک پولیس کانسٹبل کی رائفل چھین لی اور فائرنگ کی ۔ دیگر چار نے بھی پولیس والوں کے ہتھیار چھیننے کی کوشش کی اور اس وقت ہلاک ہوگئے جب پولیس نے خود کے دفاع میں فائرنگ کی ۔ ان پانچوں نے ایک رئیڈیکل ٹیراسٹس آرگنائزیشن ، بنام تحریک
غلبہ اسلام قائم کی تھی ، پولیس نے قبل ازیں کہا کہ وہ حیدرآباد اور احمد آباد میں پولیس پر فائرنگ کرنے کے چار واقعات میں ملوث تھے ۔ جس میں تین پولیس ملازمین ہلاک اور دیگر چار زخمی ہوگئے تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT