Tuesday , December 11 2018

وقفہ سوالات میں وزراء کے طویل جوابات ارکان پر گراں

وقت کی پابندی کرنے صدر نشین سوامی گوڑ کا مشورہ ، مائیک منقطع کرنے کی دھمکی
حیدرآباد ۔ 7۔ نومبر (سیاست نیوز) ریاستی وزراء کے طویل جوابات سے ارکان کو شکایت ہے جس کا اظہار آج قانون ساز کونسل میں خود ٹی آر ایس ارکان نے کیا۔ صدرنشین سوامی گوڑ نے وزراء کو ہدایت دی کہ وہ وقفہ سوالات میں طویل جواب سے گریز کریں اور مقررہ قواعد کے مطابق 9 منٹ کے اندر ایک سوال مکمل کرلیا جائے۔ انہوں نے آگاہ کیا کہ اگر وزراء اس پابندی پر قائم نہ رہیں تو وہ ان کا مائیک کٹ کرنے پر مجبور ہوجائیں گے۔ وقفہ سوالات کے دوران ٹی آر ایس کے یادو ریڈی نے شکایت کی کہ روزانہ ایجنڈہ میں 10 سوالات شامل کئے جارہے ہیں لیکن تمام سوالات کے جوابات ارکان کو نہیں مل رہے ہیں۔ وزراء کے طویل جوابات اور زائد ارکان کو ضمنی سوالات کا موقع دینے سے دیگر ارکان کے حقوق متاثر ہورہے ہیں۔ انہوں نے صدرنشین سے کہا کہ وہ وزراء کو پابند کریں کہ سوالات کا مختصر جواب دیں تاکہ تمام سوالات ایجنڈہ میں شامل ہوسکیں۔ وزیر امور مقننہ ہریش راؤ نے یادو ریڈی کی رائے سے اتفاق کیا اورکہا کہ ہر سوال کیلئے اگر صرف دستخط کنندہ ارکان کو موقع دیا جائے تو ہر کسی سے انصاف ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ایجنڈہ میں جن ارکان کے سوالات آخر میں ہیں وہ روزانہ جواب سے محروم ہیں۔ انہوں نے صدرنشین سے بی اے سی کے فیصلوں کے مطابق کارروائی چلانے کی خواہش کی۔ قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے کہا کہ بعض وزراء غیر ضروری تفصیلی بیانات دے رہے ہیں۔ سوالات کے علاوہ امور کو جواب میں شامل کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی آج کافی غصہ میں دکھائی دے رہے ہیں ۔ اس مرحلہ پر صدرنشین سوامی گوڑ نے وزراء کو تاکید کی کہ وہ مختصر جواب دیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہر سوال کیلئے 9 منٹ کا وقت مقرر کیا گیا ہے اور کسی وزیر کے مائیک کو کٹ کرنا مناسب نظر نہیں آتا۔ لہذا خود وزراء کو وقت کی پابندی کرنی چاہئے ۔ سرمائی اجلاس کے آغاز کے بعد پہلا موقع ہے جب ارکان نے وزراء کی شکایت کی ہے۔ اکثر و بیشتر طویل جوابات دینے والوں میں این نرسمہا ریڈی ، پوچارم سرینواس ریڈی ، جگدیش ریڈی ای راجندر کا شمار ہوتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT