Monday , July 16 2018
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ اراضی ریکارڈ کو ڈیجیٹلائز کرنے کی تائید

وقف بورڈ اراضی ریکارڈ کو ڈیجیٹلائز کرنے کی تائید

دفتر وقف بورڈ کو مہر بند کرنے پر حکومت جوابی حلف نامہ داخل کرے : عدالت

حیدرآباد۔/21نومبر، ( سیاست نیوز) حیدرآباد ہائی کورٹ نے وقف بورڈ کے اراضی ریکارڈ کو ڈیجیٹلائز کرنے حکومت کی کوششوں کی تائید کی اور دفتر وقف بورڈ کو مُہر بند کرنے کے خلاف دائر کردہ مفاد عامہ کی درخواست پر حکومت کو جوابی حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایت دی۔ کارگذار چیف جسٹس شیو رنگاناتھن اور جسٹس شیام پرساد پر مشتمل ڈیویژن بنچ پر آج سماعت ہوئی۔ عدالت نے درخواست گذارسے سوال کیا کہ اگر حکومت وقف بورڈ کے اراضی ریکارڈ کو ڈیجیٹلائز کرنا چاہتی ہے تو اس میں کیا اعتراض ہوسکتا ہے۔ ایم اے کے مقیت نے حکومت کے اقدام کوچیلنج کرتے ہوئے مفاد عامہ کی درخواست داخل کی جس کی آج تیسری سماعت تھی۔ ایڈوکیٹ جنرل ڈی پرکاش ریڈی نے عدالت کو بتایا کہ صرف ان4 کمروں کو مُہر بند کیا گیا جہاں ریکارڈ موجود ہے۔ باقی8 کمروں میں روز مرہ کی سرگرمیوں کو جاری رکھنے کی اجازت ہے۔ درخواست گذار کے وکیل نے کہا کہ اگرچہ حکومت نے روز مرہ کے کام کاج کی اجازت دی ہے لیکن ریکارڈ نہ ہونے کے سبب کام نہیں ہوپارہا ہے۔ وکیل نے کہا کہ ریکارڈ نہ ہونے کے سبب 18 نومبر کو وقف بورڈ کا اجلاس ملتوی کیا گیا۔ ڈیویژن بنچ نے کہا کہ ابتداء میں بعض رکاوٹیں ہوسکتی ہیں لیکن آخر میں وقف ریکارڈ کے ڈیجٹیلائزیشن سے بورڈ کو فائدہ ہوگا۔ ایڈوکیٹ جنرل نے عدالت کو واقف کرایا کہ حکومت ریکارڈ کو ڈیجیٹلائز کرنا چاہتی ہے۔ عدالت نے ایڈوکیٹ جنرل کو ہدایت دی کہ بورڈ میٹنگ کیلئے ریکارڈ کی دستیابی کو یقینی بنایا جائے۔ حکومت کو جوابی حلف نامہ داخل کرنے کی مہلت کیساتھ مقدمہ کی سماعت ملتوی کی گئی۔
وقف بورڈ میں جزوی کام بحال
صدر نشین نے بعض فائیلوں کی یکسوئی کی
اسی دوران وقف بورڈ میں 9 نومبر کے بعد آج جزوی طور پر کام بحال ہوا۔ بعض اہم سیکشنوں میں فائیلوں کی جانچ اور یکسوئی کا آغاز ہوا۔ صدرنشین محمد سلیم اور چیف ایگزیکیٹو آفیسر منان فاروقی نے آج بعض فائیلوں کی یکسوئی کی۔ دونوں نے مختلف شعبوں کا دورہ کیا اور ریونیو عہدیداروں سے ملاقات کی جو فائیلوں کی جانچ میں مصروف ہیں۔ محمد سلیم نے ریونیو حکام کو مکمل تعاون کا تیقن دلایا۔ محمد سلیم نے کہا کہ اندرون ایک ہفتہ بورڈ میں تمام سیکشن کارکرد ہوجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ فائیلوں کی ترتیب کے بعد قابل اور اہل ملازمین کے ذریعہ فائیلوں کی نگہداشت کا کام لیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اسٹاف کے تقرر کی اجازت دی ہے نااہل اسٹاف کو علحدہ کردیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT