Saturday , May 26 2018
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ فائیلوں کو مہر بند کرنے کا خیر مقدم

وقف بورڈ فائیلوں کو مہر بند کرنے کا خیر مقدم

چیرمین بورڈ و رکن کونسل محمد سلیم کا بیان
حیدرآباد ۔ 9 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : ٹی آر ایس کے رکن قانون ساز کونسل و صدر نشین تلنگانہ اسٹیٹ وقف بورڈ محمد سلیم نے وقف جائیدادوں کے فائیلوں کو مہر بند کرنے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کانگریس اور تلگو دیشم کے دور حکومت میں بڑے پیمانے پر دھاندلیاں ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے اس کی سی بی آئی تحقیقات کرانے کا حکومت سے مطالبہ کیا ۔ آج کونسل میں اقلیتی بہبود کے مختصر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے محمد سلیم نے کہا کہ وقف بورڈ کا اسٹاف صحیح نہیں ہے ۔ وقف بورڈ سے کئی قیمتی جائیدادوں کے فائیل غائب ہوچکے ہیں ۔ وہ تلگو دیشم کے دور حکومت میں بھی وقف بورڈ کے صدر نشین کی حیثیت سے خدمات انجام دے چکے ہیں ۔ تب بھی وہ اس وقت کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو کو بھی وقف بورڈ میں جاری بے قاعدگیوں کی شکایت کرچکے تھے ۔ فائیلوں کی گمشدگی اور غائب ہوجانے میں اسٹاف کا بڑا رول ہے ۔ وہ وقف بورڈ کے صدارت کی دوڑ میں بھی شامل نہیں تھے ۔ ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر نے انہیں راضی کرایا ہے اور وہ چیف منسٹر کی خواہش کا احترام کرتے ہوئے صدارت قبول کرچکے ہیں اور ابتداء سے وقف بورڈ کی کارکردگی کو بہتر بنانے اور اسٹاف کو جوابدہ بنانے کی کوشش کررہے ہیں لیکن وقف بورڈ کا اسٹاف ان کا ساتھ دینے کے لیے تیار نہیں ہے ۔ کوئی بھی فائیل طلب کریں تعاون نہیں کیا جارہا تھا ۔ وہ چیف منسٹر کے سی آر کا دل کی گہرائیوں سے اظہار تشکر کرتے ہیں جنہوں نے فائیلوں کو مہر بند کروایا ہے ۔ وہ بڑی ایمانداری اور دیانتداری سے کام کررہے ہیں وہ وقف بورڈ کا پانی اور چائے بھی نہیں پیتے ۔ کانگریس اور تلگو دیشم کے دور حکومت میں بڑے پیمانے پر دھاندلیاں ہوئی ہیں ۔ فائیلوں کو غائب کرانے میں بڑے بڑے لوگ ملوث ہیں وہ تو سی بی سی آئی ڈی کے بجائے سی بی آئی تحقیقات کرانے کا چیف منسٹر سے مطالبہ کررہے ہیں ۔ ان کی جانب سے جب بھی فائیلوں اور دیگر معاملات میں عہدیداروں سے تفصیلات طلب کی جاتی تھی اسٹاف ریکارڈ پیش کرنے سے قاصر تھے ۔ دو دن قبل بھی چیف منسٹر کے سی آر نے اعلیٰ عہدیداروں کا جائزہ اجلاس طلب کرتے ہوئے ریکارڈس طلب کیا تھا عہدیداروں کی جانب سے مناسب اور تشفی بخش جواب نہ ملنے پر وقف بورڈ کے تمام فائیلوں کو مہر بند کرادیا تھا ۔ قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے ذمہ داری قبول کرنے کے معاملے میں لعل بہادر شاستری کا حوالہ دیا ہے ۔ وہ وقف بورڈ میں پانی کے بھی روا دار نہیں ۔ اس لیے سی بی آئی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کررہے ہیں اور کسی بھی تحقیقات میں تعاون کرنے کیلئے پوری طرح تیار ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT