Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ متولی اور منیجنگ کمیٹی زمرہ میں دلچسپ مقابلہ متوقع

وقف بورڈ متولی اور منیجنگ کمیٹی زمرہ میں دلچسپ مقابلہ متوقع

آخری دن 9 پرچہ نامزدگیوں کا ادخال، مولانا اکبر نظام الدین اور محمد سلیم اہم امیدوار
حیدرآباد۔/27ڈسمبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ وقف بورڈ کے انتخابات کیلئے پرچہ نامزدگی کے ادخال کا آج آخری دن تھا۔ ارکان مقننہ، رکن بار کونسل اور متولی و منیجنگ کمیٹی کے زمرہ میں جملہ 9 پرچہ جات نامزدگی داخل کئے گئے۔ اس طرح متولی اور منیجنگ کمیٹی زمرہ میں دلچسپ مقابلہ کا امکان ہے۔ اس زمرہ میں 2 ارکان کا انتخاب کیا جانا ہے جس میں حکومت اپنے ایک تائیدی امیدوار کو منتخب کرنے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگارہی ہے۔ آج جو نامزدگیاں داخل کی گئیں ان میں ارکان مقننہ زمرہ سے جناب محمد سلیم رکن قانون ساز کونسل ٹی آر ایس اور جناب معظم خان رکن قانون ساز اسمبلی مجلس شامل ہیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی، رکن قانون ساز کونسل محمد فاروق حسین اور دوسرے محمد سلیم کے ساتھ موجود تھے۔ جبکہ مجلسی ارکان اسمبلی کے ہمراہ محمد معظم خان پرچہ نامزدگی داخل کرنے کیلئے پہنچے۔ بار کونسل زمرہ میں زیڈ اے جاوید نے پرچہ داخل کیا۔ متولی اور منیجنگ کمیٹی زمرہ میں 5 نامزدگیاں داخل کی گئیں۔ مولانا سید شاہ اکبر نظام الدین حسینی صابری نے درگاہ حضرت شاہ خاموش ؒ اور وقف کلیمیہ نور خاں بازار کی جانب سے2 علحدہ پرچہ جات نامزدگی داخل کئے۔ ان کے ہمراہ مولانا قبول پاشاہ شطاری، مولانا صدیق حسین ، مولانا اسرار حسین رضوی، مولانا فضل اللہ قادری، مولانا ظہیر الدین علی صوفی، مولانا نظام الدین ہارونی، مولانا وسیع اللہ قادری، اکرم پاشاہ، منیر الدین مختار اور دوسرے موجود تھے۔ ان کے علاوہ  مسجد بی صاحبہ پنجہ گٹہ کی منیجنگ کمیٹی کے صدر شرف الدین، مولانا وصی اللہ قادری متولی درگاہ حضرت ندیم اللہ شاہ قادری ؒ کشن باغ ، انور بیگ صدر انتظامی کمیٹی مسجد صحیفہ چادر گھاٹ اور محمود اسد اللہ صدیقی متولی صدیق گلشن بنڈلہ گوڑہ شامل ہیں۔ رکن پارلیمنٹ کے زمرہ میں حیدرآباد کے ایم پی اسد الدین اویسی کا بلا مقابلہ انتخاب یقینی ہے کیونکہ ریاست میں وہ واحد مسلم رکن پارلیمنٹ ہیں۔ پرچہ جات نامزدگی کے ادخال کے موقع پر حج ہاوز میں کافی سرگرمیاں دیکھی گئیں۔ پرچہ جات نامزدگی کی جانچ 29 ڈسمبر کو کی جائے گی اور 31 ڈسمبر  تک نامزدگی واپس لینے کی مہلت رہے گی۔ 3 جنوری کو امیدواروں کی قطعی فہرست جاری کردی جائے گی جبکہ 10جنوری کو رائے دہی اور اسی دن نتیجہ کا اعلان کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT