وقف بورڈ میں این او سی اجرائی اسکام کی جانچ کا آغاز

عابڈس پولیس میں شکایت، چیرمین محمد سلیم کا سخت گیر موقف
حیدرآباد۔/25نومبر، ( سیاست نیوز) عابڈز پولیس نے وقف بورڈ میں این او سی اجرائی کے اسکام کی جانچ شروع کردی ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے آج عابڈز پولیس اسٹیشن کے عہدیداروں کو حج ہاوز طلب کرتے ہوئے انہیں راست طور پر تحریری شکایت حوالے کی۔ انہوں نے پولیس سے خواہش کی کہ وہ اس سنگین معاملہ کی جانچ اندرون ایک ہفتہ مکمل کرتے ہوئے خاطیوں کو بے نقاب کریں۔ انہوں نے کہاکہ وقف بورڈ سے جعلی این او سی کی اجرائی ایک سنگین معاملہ ہے اور اس کے خاطیوں کا پتہ چلاتے ہوئے اس طرح کے دیگر معاملات کو منظر عام پر لایا جاسکتا ہے۔ پولیس نے درخواست کو قبول کرنے کے ساتھ ہی اپنی کارروائی شروع کردی اور وقف بورڈ کے ریکارڈ کا جائزہ لیا۔ انہوں نے چیف ایکزیکیٹو آفیسر منان فاروقی اور دیگر سیکشنوں کے سپرنٹنڈنٹس سے بات چیت کرتے ہوئے ابتدائی بیانات ریکارڈ کئے۔ پولیس عہدیداروں کو درگاہ میر محمود پہاڑی کے تحت میڑچل ضلع ملکاجگری میں موجود وقف اراضی کا ریکارڈ اور گزٹ نوٹیفکیشن حوالے کیا گیا۔ اس کے علاوہ جعلی این او سی اور اس کے حق میں جاری کردہ گزٹ نوٹیفکیشن کی نقل بھی پیش کی گئی۔ پولیس نے شدت کے ساتھ معاملہ کی جانچ شروع کردی ہے اور اس سلسلہ میں بعض مشتبہ عہدیداروں اور ملازمین کو بیان قلمبند کرنے کیلئے طلب کیا جاسکتا ہے۔ پولیس کی وقف بورڈ میں آمد کے ساتھ ہی ملازمین میں کھلبلی مچ گئی ہے۔ ملازمین اس سلسلہ میں مختلف اندیشوں کا اظہار کررہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ جعلی این او سی کی اجرائی کیلئے 3 سیکشنوں سے وابستہ عہدیدار ملوث ہوسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ ایک اور عہدیدار کی سرگرمیوں کو شک کے دائرہ میں رکھا گیا ہے۔ پولیس کی تحقیقاتی ٹیم ان مشتبہ افراد کے نام اور تفصیلات حاصل کررہی ہے جن کی سرگرمیاں سابق میں بدعنوانیوں اور دھاندلیوں پر مبنی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT