Saturday , December 15 2018

وقف بورڈ میں تعطل ختم کرنے کی کوشش

قضاۃ سیکشن اور روز مرہ کی سرگرمیوں کو بحال کرنے کا فیصلہ
حیدرآباد ۔14۔ نومبر (سیاست نیوز) حکومت نے تلنگانہ وقف بورڈ میں جاری تعطل کو ختم کرتے ہوئے قضاۃ سیکشن اور روز مرہ سے متعلق سرگرمیوں کو بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس سلسلہ میں سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے احکامات جاری کئے۔ کلکٹر حیدرآباد کو روانہ کردہ مکتوب میں خواہش کی گئی کہ میریج اور دیگر سرٹیفکٹس کی اجرائی سے متعلق قضاۃ سیکشن اور روز مرہ کے امور کی فائلوں، کورٹ کیسس اور آر ٹی آئی سے متعلق فائلوں کو فوری طور پر بحال کیا جائے تاکہ عوام کو کسی تکلیف سے بچایا جاسکے۔ واضح رہے کہ حکومت نے 8 نومبر کو ضلع کلکٹر حیدرآباد کے ذریعہ وقف ریکارڈ اور فائلوں کو تحویل میں لیتے ہوئے مہربند کرنے کی ہدایت دی تھی۔ تازہ احکامات کے بعد حکومت کے مشیر اے کے خاں ، سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل اور کلکٹر حیدرآباد یوگیتا رانا وقف بورڈ کے دفتر حج ہاؤز پہنچے اور متعلقہ سیکشنوں کو بحال کرنے کے کام کا جائزہ لیا۔ کلکٹر حیدرآباد کو ہدایت دی گئی کہ وہ ریونیو عہدیداروں پر مشتمل ایک ٹیم تشکیل دیں جو وقف کی تمام فائلوں ، اوقافی جائیدادوں ، ناجائز قبضوں اور دیگر امور کی تفصیلات تیار کریں۔ یہ کام فوری طور پر شروع کردیا جائے گا ۔ محکمہ اقلیتی بہبود نے ڈائرکٹوریٹ اقلیتی بہبود کے 6 ملازمین کو اس کام میں تعاون کیلئے مقرر کیا ہے۔ ان میں مظہر علی اسسٹنٹ ڈائرکٹر ، بی مانیا اسسٹنٹ ڈائرکٹر ، شریمتی پی ارونا سپرنٹنڈنٹ ، کے نوین کمار ریڈی سینئر اسسٹنٹ ، خیرالنساء بیگم سینئر اسسٹنٹ اور عامر علی خاں ڈیٹا انٹری آپریٹر شامل ہیں۔ ان ملازمین کو فوری طور پر کلکٹر حیدرآباد سے رجوع ہونے کی ہدایت دی گئی ہے۔ حکومت کے اس فیصلہ سے وقف بورڈ میں کل 15 نومبر سے قضاۃ سیکشن سمیت روز مرہ کی سرگرمیاں بحال ہوجائیں گی۔

TOPPOPULARRECENT