وقف بورڈ میں دوسرے دن بھی کام ٹھپ

حیدرآباد ۔ /9 نومبر (سیاست نیوز) تلنگانہ وقف بورڈ میں آج مسلسل دوسرے دن بھی کام کاج ٹھپ رہا اور ملازمین اپنے سیکشنوں میں جانے میں ناکام رہے ۔ چیف منسٹر کی ہدایت پر ریونیو حکام نے وقف بورڈ کے تمام ریکارڈ کو مہر بند کردیا ہے ۔ اس کیلئے ہر منزل پر ایک بڑے ہال کو حاصل کیا گیا جہاں اس منزل کا تمام ریکارڈ رکھتے ہوئے مہر بند کیا گیا ہے ۔ فائیلوں اور ریکارڈ کی حفاظت کیلئے پولیس کو تعینات کیا گیا ۔ اسکے علاوہ ریونیو کے عہدیدار دن رات نگرانی کررہے ہیں ۔ گزشتہ دو دن سے قضأت سیکشن بھی بند ہے جس کے باعث عوام کو میریج اور دیگر سرٹیفکیٹس حاصل کرنے میں دشواری ہورہی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ وقف بورڈ ملازمین آج صبح مقررہ وقت پر آفس پہونچے لیکن انہیں بیٹھنے کوئی جگہ نہیں تھی ۔ وہ دن بھر عمارت کی راہداریوں میں گھومتے رہے یا پھر وزیٹرس کیلئے موجود ٹیبل پر گپ شپ کرتے ہوئے وقت گزارا ۔ ملازمین خوف کے عالم میں ہیں کہ حکومت انکے خلاف کیا کارروائی کریگی ۔ چیف ایکزیکٹیو آفیسر منان فاروقی اور صدرنشین محمد سلیم کے چیمبر کھلے ہیں لیکن دونوں بورڈ نہیں پہونچے ۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر نے صدرنشین وقف بورڈ کو مسئلہ کی یکسوئی تک حج ہاؤز جانے سے منع کردیا ہے ۔ چیف منسٹر کی جانب سے حج ہاؤز سے متصل کامپلکس کو لیز پر دینے کی مخالفت کے بعد وقف بورڈ نے لیز نوٹیفیکیشن سے دستبرداری کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس فیصلہ سے وقف بورڈ کو 11 لاکھ روپئے کا نقصان ہوا جو اخبارات میں اشتہارات کی اجرائی پر خرچ ہوا تھا ۔ نوٹیفکیشن کی منسوخی کیلئے اخبارات میں دوبارہ اشتہار دینے ہونگے جس سے مزید 11 لاکھ روپئے کا نقصان ہوسکتا ہے ۔ حکومت کی منظوری کے بغیر بورڈ نے کامپلکس کو لیز پر دینے کا فیصلہ کیا تھا جس پر چیف منسٹر نے برہمی کا اظہار کرکے فیصلہ منسوخ کرنے کی ہدایت دی ۔ اس کامپلکس میں اقلیتی بہبود کے دفاتر منتقل کئے جائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT