Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ میں دیانتدار اور فرض شناس عہدیدار کی برقراری ناممکن

وقف بورڈ میں دیانتدار اور فرض شناس عہدیدار کی برقراری ناممکن

وقف مافیا اور سیاسی مداخلت کاری سے مشکلات ، حکومت توجہ دے
حیدرآباد۔/10ستمبر، ( سیاست نیوز ) وقف بورڈ میں کسی دیانتدار اور فرض شناس عہدیدار کا برقرار رہنا ممکن نہیں۔ وقف مافیا اور مقامی سیاسی جماعت ہر اُس عہدیدار کی مخالفت کرتے ہیں جو اُن کے مفادات کی تکمیل کی راہ میں رکاوٹ ثابت ہو۔ حالیہ عرصہ میں محکمہ مال کے ایک سینئر اور تجربہ کار عہدیدار محمد اسد اللہ کو چیف ایکزیکیٹو آفیسر کے عہدہ پر فائز کیا گیا تاکہ وقف اور ریونیو ریکارڈ میں یکسانیت پیدا کرتے ہوئے جائیدادوں کے تحفظ کو یقینی بنایا جاسکے۔ کئی ماہ تک یہ عہدہ خالی تھا اور ناجائز قابضین کو اپنے مفادات کی تکمیل میں کوئی رکاوٹ نہیں تھی۔ انچارج سی ای او کے ذریعہ وہ اپنے کاموں کی تکمیل کررہے تھے۔ مستقل چیف ایکزیکیٹو آفیسر کی آمد کے ساتھ ہی وقف مافیا کی سرگرمیوں پر روک لگ گئی۔ اس مافیا کو مقامی سیاسی جماعت کی سرپرستی حاصل ہے جس کے باعث اس جماعت کے قائدین وقتاً فوقتاً وقف اُمور میں نہ صرف مداخلت کرتے رہے بلکہ اعلیٰ عہدیداروں کو تبادلہ کی دھمکی دی گئی۔ حالیہ عرصہ میں بعض اہم اوقافی جائیدادوں اور کمیٹیوں کے بارے میں مقامی سیاسی جماعت نے اعلیٰ عہدیداروں پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی لیکن عہدیداروں کی غیر جانبدار کارروائی اور فیصلوں سے ناراض ہوکر انہوں نے عہدیداروں کے تبادلے کیلئے حکومت پر دباؤ بنانا شروع کردیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ وہ وقف بورڈ کے عہدیدار مجاز اور چیف ایکزیکیٹو آفیسر کے تبادلہ کیلئے سکریٹری اقلیتی بہبود اور حکومت پر زبردست دباؤ بنارہے ہیں۔ دلچسپ بات تو یہ ہے کہ اس مافیا کی ملی بھگت وقف بورڈ کے بعض اندرونی عناصر سے بھی ہے جن کی بے قاعدگیوں کے خلاف حالیہ عرصہ میں کارروائی کی گئی تھی۔ 4 عہدیداروں کو مختلف بے قاعدگیوں پر معطل کیا گیا جن میں بعض عدالت کے ذریعہ رجوع بکار ہوگئے۔ حالیہ عرصہ میں شہر کی ایک اہم اوقافی جائیداد کے بارے میں وقف بورڈ کے خلاف کام کرنے پر ایک اسسٹنٹ سکریٹری کو معطل کیا گیا جو معطلی کے خلاف عدالت سے رجوع ہوچکے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ اس عہدیدار نے اوقافی اراضی کے ڈیولپمنٹ کے سلسلہ میں وقف بورڈ کی منظوری کے بغیر معاہدہ کو نہ صرف قطعیت دی بلکہ اس کے رجسٹریشن کی راہ ہموار کی۔ حکومت اور اعلیٰ عہدیدار بھی اوقافی اُمور میں مقامی سیاسی جماعت کی بڑھتی مداخلت سے ناراض ہیں۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ وقف مافیا اور اس کی سرپرستی کرنے والے سیاسی عناصر وقف بورڈ کی تقسیم کا عمل جلد مکمل کرنے اور بورڈکی تشکیل کا مطالبہ کررہے ہیں تاکہ بورڈ میں اپنی پسند کے افراد کو شامل کرتے ہوئے مقاصد کی تکمیل کرسکیں۔ حکومت کو چاہیئے کہ وہ ان عناصر کے دباؤ میں آئے بغیر دیانتدار اور فرض شناس عہدیداروں کو نہ صرف برقرار رکھے بلکہ انہیں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے لئے ہر ممکن تعاون فراہم کرے۔

TOPPOPULARRECENT