Tuesday , December 11 2018

وقف بورڈ کو جوڈیشیل پاورس اور جائیدادوں کا تحفظ

کانگریس امیدوار فیروز خاں کا وعدہ، ، فرسٹ لانسر میں جلسہ عام سے خطاب

حیدرآباد۔/24 نومبر، ( سیاست نیوز) حلقہ اسمبلی نامپلی کے کانگریس امیدوار محمد فیروز خاں نے نامپلی اسمبلی حلقہ کے تحت تمام اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور قبرستانوں میں مفت تدفین کو یقینی بنانے کا وعدہ کیا ہے۔ فیروز خاں نے کل رات فرسٹ لانسر کے نشیمن نگر میں انتخابی جلسہ عام سے خطاب کیا۔ جلسہ میں سینکڑوں کی تعداد میں عوام نے شرکت کی اور فیروز خاں کی تقریر کے دوران وقفہ وقفہ سے نعرے لگاتے ہوئے تائید کا اعلان کررہے تھے۔ فیروز خاں نے اوقافی جائیدادوں کی تباہی اور ناجائز قبضوں کیلئے مقامی جماعت کے قائدین اور کارکنوں کو ذمہ دار قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادیں جو کہ اللہ کی امانت ہوتی ہیں ان پر قبضے کرتے ہوئے پلاٹنگ کردی گئی۔ فیروز خاں نے کہا کہ 90 فیصد قابضین کا تعلق مجلس سے ہے جبکہ 10 فیصد دوسری جماعتوں سے ہیں۔ انہوں نے وعدہ کیا کہ کانگریس برسر اقتدار آنے پر وقف بورڈ کو جوڈیشیل پاورس دیئے جائیں گے جس کے تحت غیرمجاز قابضین کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں جیل بھیج دیا جائے گا۔ فیروز خاں نے کہا کہ قابضین کا تعلق کسی بھی پارٹی سے ہو انہیں بخشا نہیں جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ قبرستانوں میں تدفین کیلئے رقومات وصول کی جارہی ہیں جو وقف ایکٹ کے خلاف ہے۔ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے تمام قبرستانوں میں مفت تدفین کا انتظام رہے۔ انہوں نے کہا کہ احمد نگر میں واقع قبرستان اور درگاہ حضرت سید احمد بادپا ؒ فرسٹ لانسر کی اراضی وقف ہے وہاں تدفین کیلئے کوئی رقومات حاصل نہیں کی جاسکتیں۔ رکن اسمبلی منتخب ہونے کے بعد وہ حکومت کے ذریعہ کارروائی کریں گے۔ انہوںنے کہا کہ موجودہ ٹی آر ایس حکومت کی بیشتر فلاحی اسکیمات میں بدعنوانیاں ہیں۔ شادی مبارک اسکیم کیلئے اگر 100 امیدوار درخواست دیتے ہیں تو ان میں 25 کو امداد مل رہی ہے اور اس کے لئے ایک سال تک انتظار کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسکیم سے استفادہ کیلئے درمیانی افراد کو 20 تا25 ہزار روپئے ادا کرنے پڑ رہے ہیں۔
فیروز خاں نے وعدہ کیا کہ رکن اسمبلی منتخب ہونے پر غریبوں کو سفید راشن کارڈ دلائیں گے جس پر اشیائے ضروریہ کے تحت املی، تیل، مرچ، نمک اور صابن بھی سربراہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آروگیہ شری اسکیم کے تحت فی الوقت 60 بیماریوں کے علاج کی سہولت ہے اور رقم کی حد 2 لاکھ ہے۔ کانگریس برسراقتدار آنے پر تمام بیماریوں کا علاج 5 لاکھ روپئے کی حد تک کیا جائے گا۔ فیروز خاں نے خانگی اسکولوں میں غریب طلبہ کے داخلوں کو یقینی بنانے کا وعدہ کیا اور کہا کہ اس سلسلہ میں اسکیم موجود ہے لیکن عمل آوری نہیں کی جاتی۔ انہوں نے ہر غریب بستی میں ہاسپٹل کے قیام کا بھی وعدہ کیا۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ انہیں ایک بار خدمت کا موقع دیں اور وہ حلقہ کو مسائل اور پسماندگی سے پاک کردیں گے۔

TOPPOPULARRECENT