Thursday , October 18 2018
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ کی خدمات جزوی طور پر بحال ، شعبہ قضاۃ ہنوز بند

وقف بورڈ کی خدمات جزوی طور پر بحال ، شعبہ قضاۃ ہنوز بند

اوقافی جائیدادوں سے متعلق فائیلوں کی جانچ ۔ غیر مجاز قابضین کے خلاف عنقریب کارروائی

حیدرآباد ۔15۔ نومبر (سیاست نیوز) حکومت نے وقف بورڈ کی خدمات کو جزوی طور پر بحال کرنے کا فیصلہ کیا، تاہم تکنیکی وجوہات کے سبب قضاۃ سیکشن کے کام کاج کا آغاز نہیں ہوسکا۔ ریونیو عہدیداروں پر مشتمل ٹیم نے آج سے فائلوںکی جانچ کا کام شروع کردیا ہے۔ اس کام میں اعانت کیلئے اقلیتی بہبود کے 6 ملازمین کو متعین کیا گیا۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے آج سے فائلوں کی جانچ کے کام کی پیشرفت کا جائزہ لیا اور عہدیداروں کو ہدایت دی کہ پہلے مرحلہ میں تمام فائلوں کو اس طرح ترتیب دیں کہ جائیدادوں ان کے تحت اراضی اور ناجائز قبضوں کی تفصیلات یکجا ہوجائیں۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ میں ابھی تک فائلوں کو رکھنے کا کوئی منظم سسٹم نہیں ہے جس کے باعث عہدیداروں کو انوینٹری تیار کرنے میں 10 تا 15 دن لگ جائیں گے ۔ ریونیو عہدیدار اوقافی جائیدادوں اور ان کے تحت موجود اراضی کی تفصیلات کے علاوہ دیگر فائلوں کو علحدہ کردیں گے۔ فائلوں کو ترتیب دینے کے بعد اعلیٰ عہدیداروں کی ٹیم ان فائلوں کا جائزہ لے گی جس کے لئے چیف منسٹر کی جانب سے عہدیداروں کا انتخاب کیا جاسکتا ہے ۔ حکومت نے 8 نومبر سے جاری تعطل کو ختم کرنے کیلئے قضاۃ سیکشن اور دیگر اہم خدمات کو بحال کرنے کا فیصلہ کیا۔ قضاۃ سیکشن میں آج سے سرٹیفکٹس کی اجرائی ہونی تھی لیکن کمپیوٹر سرور اور اکاؤنٹ سیکشن بند ہونے سے یہ ممکن نہ ہوسکا۔ ان دونوں سیکشنوں کو عہدیداروں نے مہربند کردیا ہے۔ سرٹیفکٹس کی اجرائی کیلئے کمپیوٹر سرور کا آن ہونا ضروری ہے۔ دوسرے یہ کہ روزانہ کی آمدنی کو اکاؤنٹ سیکشن میں جمع کیا جاتا ہے لیکن فی الوقت یہ سیکشن بند ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل سے اس سلسلہ میں صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے نمائندگی کی تاکہ کل سے عوام کو سرٹیفکٹ حاصل کرنے کا موقع ملے۔ انہوں نے بتایا کہ اس سلسلہ میں ریونیو عہدیداروں کو ضروری ہدایات جاری کی جائیں گی۔ حکومت نے آر ٹی آئی سیکشن بحال کرنے اور روز مرہ کی فائلوں کی یکسوئی کی ہدایت دی تھی۔ آر ٹی آئی سیکشن اس لئے بھی کارکرد نہیں ہوسکتا کیونکہ کسی بھی درخواست کا جواب دینے کیلئے ریکارڈ کا ہونا ضروری ہے۔ قضاۃ سیکشن بند ہونے سے عوام کو کافی دشواریوں کا سامنا ہے ۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ سرٹیفکٹس کی اجرائی کیلئے سیکشن کے اوقات میں اضافہ کیا جائے گا تاکہ روزانہ زائد سرٹیفکٹ جاری کئے جائیں گے۔ انہوں نے وقف بورڈ کے ریکارڈ کو بہتر بنانے کیلئے حکومت کے اقدامات کی ستائش کی تھی ۔ اسی دوران سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے جاریہ اراضی سروے میں اوقافی اراضیات کی نشاندہی کے سلسلہ میں تمام ضلع کلکٹرس کو ہدایات جاری کی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ضلع کلکٹرس 25 نومبر تک اوقافی اراضیات کے ریکارڈ کی جانچ کا کام مکمل کرلیں گے ۔ یہ ریکارڈ وقف بورڈ کی جانب سے فراہم کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT