Sunday , September 23 2018
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ کے رویہ پر سکریٹری اقلیتی بہبود کی ناراضگی

وقف بورڈ کے رویہ پر سکریٹری اقلیتی بہبود کی ناراضگی

ملازمین کے تقررات پر طلب کردہ رپورٹ کی عدم فراہمی پر سید عمر جلیل کی برہمی
حیدرآباد۔ 11 ڈسمبر (سیاست نیوز) محکمہ اقلیتی بہبود نے ایک ماہ کی مدت گزرنے کے باوجود وقف بورڈ سے طلب کی گئی رپورٹ روانہ نہ کیے جانے پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے چیف ایگزیکٹیو آفیسر کو میمو جاری کرتے ہوئے 40 ملازمین کے تقررات اور اہم درگاہوں کے انتظامات کو نامنیشن کی بنیاد پر حوالہ کرنے جیسے معاملات میں تفصیلات طلب کی تھیں لیکن 42 دن گزرنے کے باوجود آج تک یہ تفصیلات وقف بورڈ سے روانہ نہیں کی گئیں۔ حکومت نے ان معاملات کی جانچ کرنے کی ذمہ داری سکریٹری اقلیتی بہبود کے سپرد کی ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے وقف بورڈ کے رویہ پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے ایک اور میمو جاری کیا اور اس صورتحال سے چیف منسٹر کے دفتر کو بھی واقف کرایا گیا ہے۔ انہوں نے 40 ملازمین کے تقرر کے سلسلہ میں ان کی قابلیت اور اختیار کیے گئے طریقہ کار کی تفصیلات طلب کی۔ اس کے علاوہ حالیہ عرصہ میں وقف بورڈ نے اہم درگاہوں کے انتظامات اوپن ٹینڈر کے بجائے نامنیشن کی بنیاد پر حوالہ کردیئے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کے پاس منعقدہ جائزہ اجلاس میں ان معاملات کی جانچ کی ذمہ داری سکریٹری اقلیتی بہبود کو تفویض کی گئی۔ انہوں نے دونوں امور سے متعلق تفصیلات روانہ کرنے میں وقف بورڈ کی ناکامی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ایگزیکٹیو آفیسر کو تازہ میمور جاری کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ ماہ وقف بورڈ نے جعلی این او سی اسکام کی سی بی سی آئی ڈی تحقیقات کا جو فیصلہ کیا اس کی قرارداد ابھی تک حکومت کو روانہ نہیں کی گئی۔ چیف ایگزیکٹیو آفیسر کو اس سلسلہ میں بارہا توجہ دلائی گئی۔ حکومت سی ای او کی رپورٹ کی بنیاد پر معاملہ کو سی بی سی آئی ڈی سے رجوع کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے۔ وقف بورڈ کے تمام فیصلوں اور حکومت کی جانب سے طلب کردہ تفصیلات داخل کرنے کے لیے وقف بورڈ پابند ہے۔

TOPPOPULARRECENT