Sunday , February 18 2018
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ کے ریکارڈ کی جانچ سے متعلق موقف کی وضاحت پر زور

وقف بورڈ کے ریکارڈ کی جانچ سے متعلق موقف کی وضاحت پر زور

بورڈ کے ارکان کے ساتھ چیف منسٹر کے سی آر کے اجلاس سے عوام میںمایوسی ، محمد علی شبیر کا ردعمل
حیدرآباد ۔10۔ نومبر (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ وقف بورڈ کے ریکارڈ کی جانچ سے متعلق موقف کی وضاحت کرے۔ عوام میں حکومت کے اس فیصلہ سے امید پیدا ہوئی تھی کہ بے قاعدگیوں کے خاتمہ میں مدد ملے گی لیکن چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے وقف بورڈ کے ارکان اور خاص طور پر بعض ایسے ارکان جو وقف اسکام کے سلسلہ میں شک کے دائرہ میں ہے، ان کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے عوام کو مایوس کردیا ہے۔ قانون ساز کونسل میں خصوصی تذکرہ کے تحت یہ مسئلہ اٹھاتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ تین دن قبل وقف بورڈ کے ریکارڈ کو مہربند کردیا گیا۔ حکومت نے فائلوں میں بے قاعدگیوں اور ریکارڈ میں تبدیلی کی شکایت پر یہ کارروائی کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے فیصلہ سے عوام میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور ہر گوشہ سے چیف منسٹر کے اقدامات کا خیرمقدم کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے دفتر سے اس بات کا اشارہ دیا گیا کہ چیف سکریٹری یا سی بی سی آئی ڈی کے ذریعہ تحقیقات کی جائیں گی لیکن اب تک صورتحال غیر واضح ہے۔ عوام جاننا چاہتے ہیںکہ حکومت اس اسکام پر کیا کارروائی کرے گی۔ انہوں نے چیف منسٹر اور بورڈ کے ارکان کے ساتھ جائزہ اجلاس کا حوالہ دیا اور کہا کہ ایسے افراد جو خود شک کے دائرہ میں ہیں، ان کے ساتھ چیف منسٹر کا اجلاس عوام میں الجھن پیدا کر رہا ہے۔ حکومت کو واضح کرنا چاہئے کہ ایسے افراد کے خلاف کیا کارروائی کی جائے گی ۔ ڈپٹی چیف منسٹر کے سری ہری نے اس مسئلہ کو چیف منسٹر سے رجوع کرنے کا تیقن دیا۔

TOPPOPULARRECENT