Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ کے لیے سہ رکنی کمیٹی تشکیل دینے کا مطالبہ

وقف بورڈ کے لیے سہ رکنی کمیٹی تشکیل دینے کا مطالبہ

اسپیشل آفیسر کے تقرر کو کالعدم قرار دئیے جانے کے کیس کی آج عدالت میں سماعت

اسپیشل آفیسر کے تقرر کو کالعدم قرار دئیے جانے کے کیس کی آج عدالت میں سماعت
حیدرآباد۔/7اپریل، ( سیاست نیوز) اسپیشل آفیسر وقف بورڈ کے تقرر کو کلعدم قرار دیئے جانے سے متعلق ہائی کورٹ کے سنگل جج کے احکامات کے خلاف حکومت نے ڈیویژن بنچ پر اپیل دائر کی ہے اور توقع ہے کہ کل 8اپریل کو اس کی سماعت ہوگی۔ حکومت سنگل جج کی جانب سے اسپیشل آفیسر کے تقرر کو کلعدم قرار دینے کے معاملہ میں راحت حاصل کرنے ڈیویژن بنچ سے رجوع ہوگی اور توقع ہے کہ ایڈوکیٹ جنرل اس کی پیروی کریں گے۔ اسی دوران 24 مارچ سے اسپیشل آفیسر کی عدم موجودگی کے سبب بورڈ کی سرگرمیاں عملاً ٹھپ ہوچکی ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ حکومت ایک طرف اسپیشل آفیسر کی بحالی کے سلسلہ میں ہائی کورٹ کے ڈیویژن بنچ سے راحت حاصل کرنے کی کوشش کررہی ہے تو دوسری جانب بعض گوشوں کی جانب سے حکومت پر دباؤ بنایا جارہا ہے کہ وہ اسپیشل آفیسر کے بجائے وقف بورڈ کے اُمور کی انجام دہی کیلئے سہ رکنی کمیٹی تشکیل دے۔ بتایا جاتا ہے کہ ان عناصر کی سرگرمیوں کے سبب ہائی کورٹ میں حکومت کی جانب سے فوری اپیل دائر کرنے میں تاخیر ہوئی ہے۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ حکومت کو اس معاملہ سے کوئی خاص دلچسپی نہیں اور وہ صرف ضابطہ کی تکمیل کے طور پر ڈیویژن بنچ سے رجوع ہورہی ہے۔ حکومت سے قربت رکھنے والے عناصر اور اسپیشل آفیسر کے حالیہ فیصلوں سے ناراض افراد نہیں چاہتے کہ دوبارہ اسپیشل آفیسر کے ذریعہ وقف بورڈ کے اُمور انجام پائیں۔ ماہرین قانون کا کہنا ہے کہ وقف ایکٹ کی دفعہ 13کے تحت بورڈ کو عہدیدار کے بغیر خالی نہیں رکھا جاسکتا۔ اگر حکومت چاہتی تو سنگل جج کے فیصلہ کے فوری بعد خصوصی اپیل کے ساتھ عدالت سے رجوع ہوسکتی تھی لیکن اس معاملہ میں جس طرح ٹال مٹول کی جارہی ہے، ایسا محسوس ہوتا ہے کہ حکومت پر وقف مافیا اور بعض سیاسی طاقتیں اثر انداز ہورہی ہیں۔ ماہرین کے مطابق حکومت اگر چاہتی تو ایک ہی دن میں خصوصی درخواست کے طور پر ڈیویژن بنچ سے رجوع ہوکر عبوری احکامات حاصل کرسکتی تھی۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ ڈیویژن بنچ پر حکومت کس طرح موثر انداز میں پیروی کرے گی۔24مارچ سے وقف بورڈ میں تمام اہم فائیلیں زیر التواء ہیں اور ملازمین بھی مارچ کی تنخواہ سے ابھی تک محروم ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ اسپیشل آفیسر کی عدم موجودگی کا فائدہ اُٹھاکر وقف مافیا اور ان سے ملی بھگت رکھنے والے بعض اندرونی افراد فائیلوں اور ریکارڈ میں اُلٹ پھیر کی کوشش کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT