Thursday , December 13 2018

وقف جائیدادوں پر ناجائز قابضین کو ہٹانے کا مطالبہ،چیف منسٹر اپنا وعدہ پورا کریں، محمد سراج الدین کا بیان

حیدرآباد /24 جون (سیاست نیوز) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ محمد سراج الدین نے گروکل ٹرسٹ کے طرز پر وقف جائدادوں سے ناجائز قابضین کو بے دخل کرنے کا چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے مطالبہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس نے اپنے انتخابی منشور میں وقف جائدادوں کے تحفظ اور ناجائز قبضوں کو برخاست کرکے وقف بورڈ کے حوالے کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ انھوں نے کہا کہ جس طرح گروکل ٹرسٹ کی اراضیات سے ناجائز قبضوں کو برخاست کیا جا رہا ہے، اسی طرح وقف جائدادوں پر سے بھی ناجائز قبضے برخاست کرنا چاہئے اور اس سلسلے میں چیف منسٹر کو اپنا وعدہ نبھاتے ہوئے مسلمانوں کے مسائل میں اپنی دلچسپی کا اظہار کرنا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کے انتخابی منشور پر بھروسہ کرکے مسلمانوں نے ٹی آر ایس کو اقتدار تک پہنچانے میں اہم رول ادا کیا ہے، لہذا حکومت اور چیف منسٹر کی ذمہ داری ہے کہ وہ مسلمانوں سے کئے گئے وعدوں کو پورا کریں۔ محمد سراج الدین نے 12 فیصد مسلم تحفظات پر جلد از جلد عمل آوری اور تعلیمی اداروں میں مسلم تحفظات کے تحت داخلوں کو یقینی بنانے پر زور دیا اور حکومت کو یاد دلایا کہ کانگریس نے اپنے وعدہ پر اندرون دو ماہ عمل آوری کی تھی۔ انھوں نے ملازمتوں میں بھی 12 فیصد مسلم تحفظات کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ 9 ویں شیڈول کے ذریعہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی ممکن ہے، کیونکہ کرناٹک، تاملناڈو اور آسام میں اس پر عمل جاری ہے۔ انھوں نے پروفیشنل ایجوکیشن تعلیمی اداروں میں داخلے اور فیس باز ادائیگی کے سلسلے میں طلبہ اور اولیائے طلبہ کی الجھن دور کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ انجینئرنگ اور دیگر کورسس کو زمروں میں تقسیم کیا جا رہا ہے، لہذا جس طرح ایس سی، ایس ٹی طلبہ کی مکمل فیس ادا کی جا رہی ہے، اسی طرح اقلیتی طلبہ کی فیس بھی حکومت ادا کرے۔

TOPPOPULARRECENT