Tuesday , October 16 2018
Home / Top Stories / ووٹنگ مشینوں میں بلوٹوتھ کے ذریعہ چھیڑ چھاڑ،کانگریس کی شکایت بے بنیاد : الیکشن کمیشن

ووٹنگ مشینوں میں بلوٹوتھ کے ذریعہ چھیڑ چھاڑ،کانگریس کی شکایت بے بنیاد : الیکشن کمیشن

احمد آباد ۔ 9 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : گجرات کے سینئیر کانگریس لیڈر ارجن مودھ واڈیہ نے حلقہ اسمبلی پوربندر کے غالب مسلم آبادی والے علاقوں کے تین پولنگ بوتھس میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی شکایت کی ہے ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ چند الیکٹرانک ووٹنگ مشینس ( ای وی ایم ) بلو ٹوتھ کے ذریعہ کسی بیرونی آلہ سے مربوط کیے گئے ہیں ۔ الیکشن کمیشن نے کہا ہے کہ کانگریس رہنماء کی شکایت پر اس واقعہ کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں ۔ تاہم یہ شکایت غلط ثابت ہوئی ہے ، الیکشن کمیشن نے کہا کہ بلو ٹوتھ ٹکنالوجی کے ذریعہ ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ کرنے کے امکان کو مسترد کردیا ۔ مودھ واڈیہ نے جو پوریندر میں کانگریس کے امیدوار بھی ہیں کہا کہ ’ غالب مسلم آبادی والے ایک علاقے میمن واڑہ کے تین پولنگ بوتھس میں ہم نے ایسے تین وی وی ایمس کا پتہ چلایا ہے جو بلو ٹوتھ کے ذریعہ دیگر باہری آلات سے مربوط کیے گئے ہیں ۔ جب کسی موبائل فون کا بلو ٹوتھ کھولا جاتا ہے تو ایک آلہ جس کا نام ’ ای سی او 105 ‘ دستیاب بتایا جارہا ہے ۔ جس کا واضح مطلب یہ ہے کہ بلو ٹوتھ کے ذریعہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں سے چھیڑ چھاڑ اور رد و بدل کی جاسکتی ہے ۔ مودھ واڈیہ نے کہا کہ ’ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں نصب کردہ چپ کو بلو ٹوتھ کے ذریعہ استعمال کیا جاسکتا ہے ۔ جس سے ان میں چھیڑ چھاڑ کے اندیشوں میں اضافہ ہوجاتا ہے ۔ ووٹنگ سسٹم کو اس قسم کے بیرونی آلات کے رابطوں سے محفوظ رکھا جانا چاہئے ‘ ۔ مودھ واڈیہ نے کہا کہ انہوں نے ڈسٹرکٹ الیکشن آفیسر کے پاس شکایت درج کروائی ہے اور اس آفیسر نے بوتھ کا دورہ کرتے ہوئے اس کا مشاہدہ کیا ۔ چیف الیکشن آفیسر ( سی ای او ) بی بی سوین نے کہا کہ اس ضمن میں تحقیقات کا حکم دیا گیا ہے ۔ کلکٹر اور الیکشن کمیشن کے مبصر کو اس مقام پر روانہ کیا گیا ہے ۔ سوین نے کہا کہ اس شکایت پر الیکشن کمیشن سے تبادلہ خیال کے بعد ہی ضلع کلکٹر اور الیکشن کمیشن کے مبصر کو ایک انتہائی سینئیر انجینئرنگ کے ساتھ اس مقام پر روانہ کیا گیا ہے ۔ شکایت گذار کی موجودگی میں اس کی تحقیقات کی جارہی ہے ۔ تاہم حکمراں بی جے پی نے کہا کہ مودھ واڈیہ کی شکایت سے ظاہر ہوگیا ہے کہ یہ اپوزیشن پارٹی ’ ایک بہانہ کی تلاش میں ہے ‘ ۔۔

TOPPOPULARRECENT