Tuesday , January 23 2018
Home / مذہبی صفحہ / وَالْیَوْْمِ الْاٰخِرِوَالْبَعْثِ بَعْدَ الْمَوْتِ

وَالْیَوْْمِ الْاٰخِرِوَالْبَعْثِ بَعْدَ الْمَوْتِ

{قیامت پر ایمان لانے کا بیان} ۸۔ حوض کوثر ۔اللہ تعالیٰ نے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو ایک حوض عطا فرمایا ہے جس کانام کوثر ہے ۔ آپؐ کی امت اس کے پانی سے قیامت کے دن سیراب ہوگی ۔ اس کا پانی دودھ سے زیادہ سفید اور شہد سے زیادہ شیریں ہے ‘ جو اسے ایک بار پئے گا وہ پھر پیاسا نہ ہوگا ۔

{قیامت پر ایمان لانے کا بیان}
۸۔ حوض کوثر ۔اللہ تعالیٰ نے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو ایک حوض عطا فرمایا ہے جس کانام کوثر ہے ۔ آپؐ کی امت اس کے پانی سے قیامت کے دن سیراب ہوگی ۔ اس کا پانی دودھ سے زیادہ سفید اور شہد سے زیادہ شیریں ہے ‘ جو اسے ایک بار پئے گا وہ پھر پیاسا نہ ہوگا ۔
۹۔ شفاعت ۔(۱) قیامت کے دن ایک نہیں دو نہیں ہزاروں طرح کی مصیبتیں اور پریشانیاں ہوں گی جن سے لوگ بیقرار ہو کرپیغمبروں کے پاس سفارش کیلئے دوڑے دوڑے پھریں گے مگر کسی پیغمبر کو اس کی جرأت نہ ہوگی ۔بالآخر سب سے مایوس ہو کر ہمارے رسول حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں حاضر ہوں گے ۔ آپؐ (چونکہ رحمت للعالمین و شفیع المذنبین ہیں ) سب کودلاسا اور تسلی دیں گے اوربارگاہ رب العزت میں پیش ہو کر شفاعت فرمائیںگے۔ اس شفاعت کو ’’ شفاعت عظمیٰ‘‘ اور مقام شفاعت کو ’’ مقام محمود‘‘ کہتے ہیں ۔یہ شفاعت آپ ہی سے خاص ہے ۔
(۲) آپ کی شفاعت سے سب اہل ایمان مستفید ہوں گے اگرچہ گناہ کبیرہ کے مرتکب ہوئے ہوں ۔
(۳) ا نبیاء ‘ اولیاء ‘ علماء ‘ صلحاء ‘ شہداء وغیرہ کی شفاعت بھی حق ہے ۔

۱۰۔ جنت ۔(۱) جنت پیدا ہوچکی ہے۔ جو ایک عیش و آرام کی جگہ ہے اور جس میں طرح طرح کی نعمتیں موجود ہیں ۔جو نیک لوگوں کو نیکیوں کے صلہ میں فضل الٰہی سے عطا ہوں گی ۔
(۲) جنت اور اہل جنت کبھی فنا نہ ہوں گے نہ جنتیوں کو کسی قسم کی تکلیف یا رنج و غم ہوگا‘ بلکہ وہ ( اپنے اپنے نیک اعمال کے اندازہ سے ) ہمیشہ عیش و آرام میں رہیں گے ۔
(۳) جنت میں سب سے بڑی نعمت اللہ تعالیٰ کا دیدار ہے جو جنتیوں کو نصیب ہوگا ۔اس کے مقابل تمام نعمتیں ہیچ ہیں ۔
۱۱۔ دوزخ ۔ (۱) دوزخ بھی پیدا ہوچکی ہے ‘جس میں آگ ‘ سانپ ‘ بچھو ‘ طوق‘ زنجیر اور طرح طرح کے عذاب ہیں جو بدکاروں کو بدکاریوں کے عوض دیئے جائیں گے ۔
(۲ )دوزخ و اہل دوزح کبھی فنا نہ ہوں گے ۔ یعنی جو لوگ کافر و مشرک ہیں وہ دوزخ میں ہمیشہ رہیںگے ۔ ان کو موت بھی نہ آئے گی کہ مر کر عذاب سے نجات پاسکیں ۔
(۳) بعض گنہگار مسلمان بھی دوزخ میں داخل ہوں گے لیکن ہمیشہ اس میں نہ رہیں گے بلکہ جن میں ذرہ برابر بھی ایمان ہوگا وہ (کتنے ہی بڑے گنہگار ہوں ) بالآخر بقدر گناہ عذاب پا کر یا حضرت رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی شفاعت سے یا محض حق تعالیٰ کی رحمت سے جنت میں چلے جائیں گے ۔
اخذ: نصاب اہل خدمات شرعیہ حصۂ عقائد
مرسل : ابوزہیر

TOPPOPULARRECENT