Tuesday , September 25 2018
Home / ہندوستان / وکی تیاگی قتل کیس کے ملزم کی جان کو خطرہ

وکی تیاگی قتل کیس کے ملزم کی جان کو خطرہ

مظفرنگر ۔ 24 فبروری۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) جیل حکام نے وکی تیاگی قتل کیس کے ایک ملزم کو ضلع کی دوسری جیل منتقل کردینے کی مقامی عدالت سے درخواست کی ہے اور بتایا کہ یہاں پر ملزم کی جان کو خطرہ ہے ۔ سپرنٹنڈنٹ ضلع جیل مسٹر شیورام چودھری نے ایک عرضی عدالت میں پیش کرتے ہوئے بتایا قتل کیس کے ملزم ساگر ملک کو مظفرنگر جیل سے دوسری جیل منتقل کردیا جائ

مظفرنگر ۔ 24 فبروری۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) جیل حکام نے وکی تیاگی قتل کیس کے ایک ملزم کو ضلع کی دوسری جیل منتقل کردینے کی مقامی عدالت سے درخواست کی ہے اور بتایا کہ یہاں پر ملزم کی جان کو خطرہ ہے ۔ سپرنٹنڈنٹ ضلع جیل مسٹر شیورام چودھری نے ایک عرضی عدالت میں پیش کرتے ہوئے بتایا قتل کیس کے ملزم ساگر ملک کو مظفرنگر جیل سے دوسری جیل منتقل کردیا جائے کیونکہ ان کی زندگی کو خطرہ لاحق ہے جبکہ قتل کیس کے دوسرے ملزم کے ساتھ مقتول کی اہلیہ مینوتیاگی اس جیل میں محروس ہے اور جیل حکام نے جیل کے اطراف سکیورٹی انتظامات سخت کردیئے ہیں۔ ساگر ملک کو علحدہ کوٹھری میں رکھا گیا ہے۔ واضح رہے کہ 16 فبروری کو ساگر ملک نے وکیل کے بھیس میں آکر احاطہ عدالت میں وکی تیاگی پر کئی راؤنڈ فائر کئے تھے اور اُسے برسرموقع گرفتار کرلیا گیا تھا ۔ قتل کیس کے ایک اور ملزم برج بیرسنگھ کو 17 فبروری کے دن گرفتار کرکے 2 مارچ تک عدالتی تحویل میں دیدیا گیا ۔ سال 2011 ء کے باراکلی قتل کیس میں وکی تیاگی کے خلاف ایک مقدمہ زیردوران تھا جس میں ایک ہی خاندان کے 8 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔

سی پی آئی لیڈر گویند پنسارے کی آخری رسومات
کولہا پور ۔ 24 فبروری۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) سی پی آئی کے بزرگ قائد گویند پنسارے کو ہزارہا افراد بشمول بائیں بازو کے قائدین اور شعبہ حیات کی مختلف شخصیوں نے آج بہ دیدہ نم وداع کیاجبکہ ان کی نعش کو آج پنچ گنگا ندی کی گھاٹ پر بغیر کسی مذہبی رسومات کے نذر آتش کردیا گیا۔ وہ مخالف ٹول ٹیکس تحریک کے لیڈر اور معقولیت پسند تھے ۔ ان کی چتا کو آج شام ان کے پوترے کبیر اور ملہر نے آگ دکھائی ۔ گویند پنسارے کو 16 فبروری کی صبح چہل قدمی سے واپسی کے بعد ان کے مکان کے قریب نامعلوم حملہ آوروں نے گولی ماردی تھی جس میں وہ شدید زخمی ہوگئے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT