Friday , April 27 2018
Home / Top Stories / وہائٹ ہاؤز کے سامنے گرین کارڈ کے منتظر سینکڑوں ہندوستانیوں کی ریالی

وہائٹ ہاؤز کے سامنے گرین کارڈ کے منتظر سینکڑوں ہندوستانیوں کی ریالی

٭ میرٹ کی اساس پر امیگریشن سسٹم کیلئے ٹرمپ کے منصوبے کی حمایت
٭ ہندوستان کے ہزاروں ماہرین و پروفیشنلس کو فائدہ ہوگا

واشنگٹن ۔ /4 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں مقیم ہر شعبہ میں مہارت رکھنے والے سینکڑوں ہندوستانیوں نے وہائٹ ہاؤز کے سامنے اپنے بچوں اور بیویوں کے ہمراہ ریالی نکالی ۔ یہ لوگ برسوں سے گرین کارڈ کے حصول کے منتظر ہیں ۔ ریالی میں شریک تمام ہندوستانیوں نے میرٹ کی بنیاد پر ایمگریشن سسٹم بنانے کیلئے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے منصوبے کی پرزور حمایت کی ۔ ان کے منصوبے سے سلسلہ وار ایمگریشن کا خاتمہ ہوجائے گا اور لاٹری ویزا کا بھی چلن ختم ہوگا ۔ اس ریالی میں شرکت کیلئے امریکہ کے دور دراز علاقوں سے جیسے کیلیفورنیا ، ٹیکساس اور شکاگو سے دارالحکومت واشنگٹن پہونچنے والے ہندوستانیوں نے کہا کہ امریکہ میں ہم برسوں سے مقیم ہیں ۔ لیکن انہیں اب تک گرین کارڈ حاصل نہیں ہوا ہے ۔ ریالی میں شریک ان ہندوستانیوں نے ٹرمپ پر زور دیا کہ وہ امریکہ میں مستقل قیام کیلئے قانونی موقف کی فی ملک حد کو ختم کردیں ۔ ہندوستانیوں کو یہاں پر گرین کارڈ کے حصول کیلئے 12 سال تک انتظار کرنا پڑتا ہے ۔ ریالی میں حصہ لینے والوں میں زیادہ تر سافٹ ویئر انجنیئرس تھے جو اپنے بیوی بچوں کے ساتھ سڑک کے راستے جیسے فلوریڈا ، نیویارک اور دیگر علاقوں سے بھی یہاں پہونچے تھے ۔ ہندوستانی شہری اپنی خوبیوں اور مہارت کے ذریعہ امریکہ کی ترقی اور خوشحالی میں اہم رول ادا کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گرین کارڈ کے حصول کیلئے ملکوں کے حصے میں جو حد مقرر کی گئی ہے اسے ختم کیا جانا چاہئیے۔صدر ٹرمپ نے گزشتہ روز اسٹیٹ آف دی یونین ایڈریس میں میرٹ کی بنیاد پر ایمگریشن سستم بنانے کی تجویز رکھی تھی اور کہا تھا کہ امریکہ میں صرف ماہر افراد کو داخلہ کی اجازت دی جائے گی ۔اس تجویز سے ہندوستان جیسے ملکوں سے متعلق رکھنے والے ٹکنالوجی پروفیشنلس کو فائدہ ہوگا ۔ وہائٹ ہاؤز کے سامنے ٹرمپ کی ایمگریشن پالیسی کے حق میں یہ اپنی نوعیت کی پہلی ریالی تھی ۔ ریالی میں شریک افراد کے ہاتھوں میں بیانر اور پوسٹرس تھے جس پر “Cut Green Card backlog’, جیسے نعرے لکھے ہوئے تھے ۔ ہندوستان سے تعلق رکھنے والے اعلیٰ ماہرین کو گرین کارڈ کے حصول کیلئے 12 سال تک انتظار کرنا پڑتا ہے جبکہ دیگر ملکوں کے شہریوں کو صرف دوسال میں ہی گرین کارڈ حاصل ہوتا ہے ۔ ریالی میں شریک ایک نوجوان نے بتایا کہ تقریباً دو لاکھ بچے قانونی طور پر ایمگرینٹ ہونے کے منتظر ہیں جو اپنے والدین کے ساتھ یہاں رہتے ہیں ۔ ٹرمپ کے ایمگریشن اصلاحات کو تیز تر کرنے کی ضرورت ہے تاکہ اس مسئلہ سے نمٹنے کیلئے آسانی ہوسکے ۔ ایمگریشن مسائل سے متعلق ہندوستانیوں میں بے چینی پائی جاتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT