Wednesday , November 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / ’’ویراٹ کا بھروسہ کارگر، ورنہ شاید میں ریٹائر ہوجاتا ‘‘

’’ویراٹ کا بھروسہ کارگر، ورنہ شاید میں ریٹائر ہوجاتا ‘‘

کٹک ، 20 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) یوراج سنگھ نے کینسر کے خلاف اپنی جدوجہد کے بعد ایک مرحلے پر ریٹائرمنٹ لینے کا سوچ لیا تھا لیکن کپتان ویراٹ کوہلی کے بھروسہ نے انھیں کرکٹ ایکشن جاری رکھنے کا حوصلہ دیا جس نے انھیں صلہ کے طور پر ڈٹ کر کھیلنے کی تحریک بخشی۔ یوراج پھر ایک بار قوم کے چہیتے بن گئے جب انھوں نے انگلینڈ کے خلاف کریئر کی بہترین 150 رنز کی اننگز کھیلی۔ یوراج نے دوسرے او ڈی آئی میں انڈیا کی سیریز جیتنے والی فتح کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کہا، ’’خوداعتمادی تو ہمیشہ ہوتی ہے جب آپ کو ٹیم اور کیپٹن کی تائید و حمایت حاصل ہو۔ میں سمجھتا ہوں ویراٹ نے مجھ پر کافی بھروسہ کیا اور یہ میرے لئے اہم رہا کہ ڈریسنگ روم میں دیگر بھی مجھ پر بھروسہ جتا رہے ہیں۔‘‘ 35 سالہ یوراج نے کہا: ’’ایسا وقت بھی آیا جب میں شش و پنج میں مبتلا ہوا کہ کھیل جاری رکھوں یا سبکدوش ہوجاؤں۔ میرے خیال میں اس سارے سفر میں کئی افراد نے میری مدد کی۔ لہٰذا، کبھی امید نہ ہارنا میری تھیوری ہے۔ اور میں نے حوصلہ نہیں چھوڑا، سخت محنت جاری رکھی۔ میں جانتا تھا، وقت بدلے گا۔‘‘
میں دھونی کا نقاد نہیں: یوگراج
اس دوران یوراج سنگھ کے والد یوگراج سنگھ نے جو کچھ عرصہ قبل ایم ایس دھونی کے خلاف بیان بازی سے شہ سرخیوں میں رہے، انھوں نے آج وضاحت کی کہ وہ سابق کپتان پر غیرضروری تنقیدیں کرنے والے نقاد نہیں رہے، بلکہ اُن کا ماننا ہے کہ دھونی کو یوراج کی مشکل وقتوں میں تائید کرنی چاہئے تھی۔ بہرحال یوگراج نے انگلینڈ کے خلاف دوسرے او ڈی آئی میں یوراج کے ساتھ دھونی کی ریکارڈ اننگز کے بعد اپنے بیٹے کے سابق کیپٹن کو معاف کردیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT