Friday , November 24 2017
Home / کھیل کی خبریں / ویسٹ انڈیز پر ناقابل تسخیر سبقت ، ہندوستان کی جیت پر نظر

ویسٹ انڈیز پر ناقابل تسخیر سبقت ، ہندوستان کی جیت پر نظر

سمیع اور اومیش نے میزبان بیٹسمین کو پسپا کردیا، طاقتور مہمانوں کے آگے بے بس، میزبانوں کو اننگز شکست کا سامنا
نارتھ ساؤنڈ (اینٹی گا)۔24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کی طاقتور ٹیم نے ویسٹ انڈیز کی کمزور و بے بس ٹیم کو امکانی طور پر اننگز شکست کے دہانے پر پہونچا دیا ہے۔ پہلے ٹسٹ کرکٹ میچ کے تیسرے دن ویسٹ انڈیز کو فالو آن پر مجبور ہونا پڑا تھا اور دوسری اننگز میں وہ ایک وکٹ کے نقصان سے 21 رن بناسکی۔ ہندوستانی بولرس نے غیرمعمولی مہارت و مستعدی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پہلی اننگز میں ویسٹ انڈیز کو 243 رن پر آؤٹ کردیا تھا۔ اس طرح مہمانوں کو اپنے حریفوں پر 323 رن کی ناقابل تسخیر سبقت حاصل ہوگئی تھی۔ محمد سمیع نے دیڑھ سال تک زخموں سے پریشان رہنے کے بعد اپنی شاندار واپسی کی۔ انہوں نے 66 رنز دے کر 4 وکٹس حاصل کیا۔ اومیش یادو نے صرف 41 رن کے عوض چار وکٹس لیا۔ اس طرح سمیع اور یادو نے ویسٹ انڈیز کی باری کو عملاً پریشان کن حالات میں 243 رن پر اس وقت ختم کردیا جبکہ آج کے دن کا کھیل ختم ہونے کیلئے ہنوز 13 اوورس جاتی تھے۔ ہندوستانی بولرس کے جارحانہ حملوں کے باوجود شین ڈورچے 10 چوکوں کی مدد سے 57 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے اور کپتان جیسن ہولڈ نے 36 رنز بنایا۔

ان دونوں نے آٹھویں وکٹ کی ساجھیداری میں اپنی ٹیم کیلئے 69 رنز کا اضافہ کیا جس کے بعد ہندوستانی ٹیم نے انہیں فالو آن پر مجبور کردیا۔ ویسٹ انڈیز اپنی دوسری اننگز میں 13 اوورس میں ایک وکٹ کے نقصان سے 21 رنز بناسکی۔ ہندوستانی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 556 رنز بناکر اننگز ڈیکلر کرچکی تھی اور ویسٹ انڈیز کی ٹیم ہنوز 302 رنز سے پیچھے ہے۔ قبل ازیں سروپوٹین رچرڈس اسٹیڈیم میں ڈورچ اور ہولڈر درمیان میں اچھا کھیلتے رہے اور ان کی رفاقت میں اسکور بورڈ پر اضافہ دیکھا جاتا رہا۔ 81 ویں اوور میں ان کا اسکور 200 رنز تک پہونچ گیا اور 80 گیندوں میں ان دونوں نے اپنی ٹیم کیلئے 50 رنز مکمل کیا۔ روی چندرن اشون (0-43) نے نئی گیند سے بولنگ کا آغاز کیا لیکن بہت جلد اومیش یادو اور محمد سمیع بھی آگئے۔ اس اثناء میں ڈورچ نے 75 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے اپنی دوسری ٹسٹ نصف سنچری مکمل کی اور نئی گیند میں سختی کے سبب کچھ دیر تک رنز بنانے کا سلسلہ جاری رہا جو زیادہ دیر تک باقی نہیں رہا۔ اومیش یادو بولنگ محاذ پر آگئے اور 86 ویں اوور میں ہولڈر کو ایک گیند ڈالی جس پر وکٹ کیپر وردھی مان سہا کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔ اس اننگز کے دوران آؤٹ ہونے والے وہ چھٹویں کھلاڑی تھے۔ اس طرح سہا بھی فرخ انجینئر اور مہیندر سنگھ دھونی کے ریکارڈ کے مساوی ہوگئے۔ بعدازاں یادو نے کارلوس براتھوائٹ کو پہلی گیند پر صفر پر آؤٹ کردیا۔

امیت مشرا (2-43) نے شانن گیبرئیل کو دو رن پر آؤٹ کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز کی مزاحمت کو ختم کردیا۔ 323 رن سے پیچھے رہنے والی ویسٹ انڈیز کی ٹیم کو فالو آن کیلئے مجبور ہونا پڑا۔ ایشانت شرما (1-3) نے فارم میں موجود کریگ براتھوائٹ (2) کو پہلے ہی اوور میں ایل بی ڈبلیو آؤٹ کردیا جس کے بعد راجندرا چندریکا (9 ناٹ آؤٹ) اور ڈیرن برایوو (10 ناٹ آؤٹ) مزید کسی نقصان کے بغیر کامیابی کے ساتھ کھیل رہے تھے۔ قبل ازیں ہندوستانی بولرس نے لنچ کے وقفہ کے بعد مزید بہتر کھیل کا مظاہرہ کیا اور وہ اج صبح سے اپنی لائن اور لینتھ میں تبدیلی پر توجہ مرکوز کئے ہوئے تھے چنانچہ محمد سمیع کی آمد کے فوری بعد یہ تبدیلی دیکھی گئی جنہوں نے براتھوائٹ (74) اور مارلون سیمیولس (1) کو مخمصہ میں ڈال رکھا اور بالآخر سیمیولس ان کا شکار ہوگئے۔ جس کے بعد چوتھی گیند ویسٹ انڈیز کیلئے دوسرا بڑا دھکہ ثابت ہوئی جس نے جرمائین بلیک ووڈ (صفر) کو اپنا نشانہ بنایا۔ وہ اجنکیا رہانے کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔ بعدازاں براتھوائیٹ اور پہلی مرتبہ کھیلنے والے روسٹن چیس (23) کے درمیان ایک مختصر رفاقت رہی اور اطمینان بخش انداز میں اپنی ٹیم کیلئے 47 رن کا اضافہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT