Monday , September 24 2018
Home / ہندوستان / ویلنٹائن ڈے کی مخالفت میںسماجی و سیاسی تنظیموں کی مہم

ویلنٹائن ڈے کی مخالفت میںسماجی و سیاسی تنظیموں کی مہم

جمشید پور۔/14فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) ویلنٹائن ڈے کے موقع پر ایک پارک میں جمع لڑکے اور لڑکیوں کے گروپ کا مقامی سخت گیر تنظیموں نے تعاقب کیا اور انہیں پارک سے بھاگ جانے پر مجبور کردیا۔ اطلاع ملتے ہی پولیس نے ان تنظیموں کا پیچھا کیا۔ پولیس نے بتایا کہ راشٹریہ مانو جن کلیان سینا جو کہ ایک سماجی اور سیاسی تنظیم ہے بشٹو پور میں واقع ایک پا

جمشید پور۔/14فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) ویلنٹائن ڈے کے موقع پر ایک پارک میں جمع لڑکے اور لڑکیوں کے گروپ کا مقامی سخت گیر تنظیموں نے تعاقب کیا اور انہیں پارک سے بھاگ جانے پر مجبور کردیا۔ اطلاع ملتے ہی پولیس نے ان تنظیموں کا پیچھا کیا۔ پولیس نے بتایا کہ راشٹریہ مانو جن کلیان سینا جو کہ ایک سماجی اور سیاسی تنظیم ہے بشٹو پور میں واقع ایک پارک میں موجود لڑکے اور لڑکیاں جو ویلنٹائن ڈے منانے کیلئے جمع ہوئے تھے، تعاقب کرتے ہوئے انہیں وہاں سے بھاگنے پر مجبور کردیا۔ مشرقی سنگھ بھوم ضلع کے پولیس سربراہ کرشنا مراری نے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ نے ویلنٹائن ڈے کے موقع پر وسیع پیمانے پر سیکوریٹی انتظامات کئے تھے تاکہ کسی بھی ہنگامی صورتحال میں لاء اینڈ آرڈر کو برقرار رکھا جاسکے۔دریں اثناء کشمیر کے سری نگر سے موصولہ اطلاع کے مطابق سخت گیر نظریہ کی حامل خاتون جماعت دختران ملت کی سربراہ عائشہ اندرابی اور ان کی تین ساتھیوں کو ویلنٹائن ڈے کے خلاف سرگرمی پر پولیس نے حراست میں لے لیا ہے۔ واضح رہے کہ ہر سال ویلنٹائن ڈے کے موقع پر دختران ملت کے سربراہ اور کارکنان سرینگر میں موجود ریسٹورنٹس اور کیفیز کا دورہ کرتے ہوئے نوجوان لڑکے لڑکیوں کا تعاقب کرتے ہیں۔

اندرا بی اور ان کے ساتھیوں کو پولیس نے احتیاطی طور پراسوقت حراست میں لے لیا جب وہ اپنے ساتھیوں کے ہمراہ پریسیڈنسی روڈ پر ہوٹلوں اور کیفے میں جہاں پر نوجوان جوڑوں کے خلاف کارروائی کررہی تھیں۔ ذرائع نے بتایا کہ علحدگی پسند لیڈر اور اس کے ساتھیوں کو رام باغ ویمن پولیس اسٹیشن لے جاکر رکھا گیا ہے۔ حراست میں لیئے جانے سے قبل عائشہ اندرابی نے ذرائع ابلاغ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ویلنٹائن ڈے منانا مکمل طور پر غیر اسلامی حرکت ہے اور اسے مسلم سماج میں کسی بھی صورت برداشت نہیں کیا جاسکتا۔انہوں نے کہا کہ ہم ایک مسلم سماج میں رہتے ہیں اور اسلام شادی سے پہلے اختلاط کی اجازت نہیں دیتا۔ہندو توا تنظیموں نے بھی ملک کے مختلف شہرو ںمیں ویلنٹائن ڈے منانے والے جوڑوں کو حملوں کا نشانہ بنایا اور ان پر سڑے ٹماٹر برسائے۔ ماضی میں ایسے جوڑوں کو زبردستی شادی کرنے پر مجبور کئے جانے کے واقعات کی مذمت کے بعد جاریہ سال طریقہ کار تبدیل کردیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT