Friday , February 23 2018
Home / Top Stories / ویڈیو: خودساختہ مسلم لیڈر وسابق سی ایم کشمیر فاروق عبداللہ کی خانگی زندگی کاکریں مشاہدہ

ویڈیو: خودساختہ مسلم لیڈر وسابق سی ایم کشمیر فاروق عبداللہ کی خانگی زندگی کاکریں مشاہدہ

سری نگر:کشمیری عوام پر ڈھائے جانے والے مظالم کو نذر انداز کرتے ہوئے ‘ سابق چیف منسٹر فاروق عبداللہ سوشیل میڈیا پر گشت کررہے ایک ویڈیو میں نہایت چنچل انداز میں دیکھے جاسکتے ہیں ۔

اس ویڈیو میں سابق چیف منسٹر جموں میں ایک شادی کی تقریب میں شرکت کرنے کے لئے پہنچے تھے وہ وہا ں پر بالی ووڈ کے مشہور نغمہ جس کے اداکارہ شمی کپور ہیں پر ناچنے لگے‘ وہ نغمہ ’ آج کل تیرے میرے پیار کے چرچے ‘ تھا۔جیسے ہی یہ نغمہ بجایا گیا ‘ نیشنل کانفرنس ( این سی) صدر خود کو روک نہیں پائے اور شمی کپور کے انداز میں شادی کی تقریب میں موجود خواتین کے ساتھ باربار تھرکنے لگے۔

کیا آپ توقع کرتے ہیں کہ اس قسم کے خودساختہ مسلم قائدین جو عوامی سطح پر اسلام ‘ سنت اور مسلمانوں کی بات کرتے ہیں اور اپنی ذاتی زندگی میں مخالف سنت کام کرتے ہیں کے ذریعہ کشمیر کے مسائل حل ہوسکتے ہیں۔

برہان وانی کے موت کے بعد وادی میں سلسلہ وار تشدد کے واقعات 9جولائی سے شروع ہوئے اور اس کی وجہہ سے کشمیری نوجوانوں کے پیلٹ بلٹ سے چہرے چلنے اور تباہ کردئے گئے۔

ایک سو سے زائد شہری بشمول اسکولی بچے اس میں ہلاک ہوئے ‘ پانچ سو سے زائد کی دونوں آنکھوں نیں پیلٹ گنس داغے گئے جس کی وجہہ سے وہ بصرت سے محروم ہوگئے اس کے علاوہ سینکڑوںآنکھوں کے مہلک امراض میں مبتلا ء ہوگئے۔

بے قصور نوجوانوں کے ساتھ سرکاری فورسس کے بے رحمی اور بربریت کشمیری عوام کو سرد مہری میں مبتلا کردیا ہے۔پیلٹ سے متاثر ہ خاندانوں کوبیماری اور تکلیف کا بوجھ اٹھانے کے لئے انہیں تنہا چھوڑ دئے گئے۔

ایسا مسلم قیادتیں پچھلے 70سالوں سے اللہ سبحان تعالی اور رسول مقبولﷺ کی بات تو کرتے ہیں اور صرف مسلم سماج کے ساتھ صرف زبانی خرچ کرتے ہیں۔

یہ ہے فلم کے گیت پر مشتمل اصلی ویڈیو

Top Stories

مولانا آزاد کی برسی پر تقریب کا انعقاد دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی‘ صدر جمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی اور نائب صدر جمہوریہ نے اپنا پیغام بھیجا نئی دہلی۔آزادہندو ستا ن کے پہلے وزیر اتعلیم مولانا آزاد کے ساٹھ ویں یوم وفات کے موقع پر آج ان کے مزار واقع مینابازار میں ایک تقریب کا انعقاد ائی سی سی آر کی جانب سے کیاگیا۔افسوس کی بات یہ رہی کہ اس مرتبہ بھی مولانا آزاد کی وفات کے موقع پر دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے کسی بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی۔ چونکہ جامع مسجد پر کناڈہ کے وزیراعظم کو آناتھا اس لئے تقریب کو بہت مختصر کردیا گیاتھا۔ اس دوران صدرجمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی کی گئی او رنائب صدر جمہوریہ ہند نے اپنا پیغام بھیجا۔ ائی سی سی آر کے ڈائریکٹر نے مولانا آزاد کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ جہاں تک مولانا آزاد کا تعلق ہے اور انہوں نے جو خدمات انجام دیں انہیں فراموش نہیں کیاجاسکتا۔ ہندو مسلم میں اتحاد قائم کیااس کی مثال ملنا مشکل ہے انہوں نے بھائی چارہ کوفروغ دیا۔ انٹر فیتھ ہارمنی فاونڈیشن آف انڈیاکے چیرمن خواجہ افتخار احمد نے کہاکہ مولانا آزاد نے لڑکیوں کی تعلیم پر بہت زیادہ توجہ دی۔ جب حکومت قائم ہونے کے بعد قلمدان کی تقسیم ہونے لگے تو مولانا آزاد نے تعلیم کا قلمدان لیاتاکہ لڑکیو ں کی تعلیم پر خاص دھیان دیاجاسکے۔ خاص طور سے مسلم لڑکیو ں کی تعلیم پر زیادہ دھیان دیاجائے۔کیونکہ مسلم لڑکیو ں کو پڑھنے کے زیادہ مواقع نہیں مل پاتے ۔ معروف سماجی کارکن فیروز بخت احمد مولانا سے منسوب ایک پروگرام میں پونے گئے ہوئے تھے۔ انہوں نے نمائندہ کو فون پر بتایا کہ مولانا آزاد کی تعلیمات کو قوم نے بھلادیا ہے۔ آج تک ان جیسا لیڈر پیدا نہیں ہوسکا اور افسوس کی بات ہے کہ مولانا آزاد کی برسی یا یوم پیدائش کے موقع پر دہلی یامرکزی حکومت کی جانب سے کوئی بڑا لیڈر شریک نہیں ہوتا۔ ایسا معلوم ہوتا کہ حکومت نے مولانا آزاد کو بھلادیا ہے۔ اس دوران سی سی ائی آر کی ایک کمار مولانا ابولکلام آزاد فاونڈیشن کے چیرمن عمران خان سمیت کافی لوگ موجود تھے۔
TOPPOPULARRECENT