Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹاؤن پلاننگ میں درخواستوں کی 21 دن میں یکسوئی پر زور

ٹاؤن پلاننگ میں درخواستوں کی 21 دن میں یکسوئی پر زور

تاخیر پر جرمانے عائد کرنے عہدیداروں کو انتباہ ۔ وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر کا خطاب

حیدرآباد۔12فبروری ( سیاست نیوز) وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر نے ٹاؤن پلاننگ عہدیداروں کو اندرون 21 یوم درخواستوں کی عدم یکسوئی پر جرمانے عائد کرنے کا انتباہ دیا ۔ انسٹی ٹیوشن آف انجنیئرنگ آفس میں ریاست کے ٹاؤن پلاننگ عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر جی ایچ ایم سی ‘ ڈی ٹی سی پی عہدیدار ریاست بھر میں خدمات انجام دینے والے ٹاؤن پلاننگ کے عہدیداروں نے شرکت کی ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ علحدہ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد عوام نئے نظم و نسق کی توقع کررہے ہیں ‘ عوام کی توقعات کو پورا کرنے بڑے پیمانے پر اصلاحات کئے جارہے ہیں ۔ اس سلسلہ کی کڑی کے طور پر اسٹیٹ یونیفائیر رولس متعارف کرائے گئے ہیں ۔ وزیر بلدی نظم و نسق نے کہا کہ عام آدمی کو بغیر کسی دشواریوں کے شفافیت فراہم کرنے ڈی پی ایم ایس نظام پر عمل کیا جارہا ہے ۔ اس سسٹم کے تحت اندرون 21 یوم تمام منظوریوں کو یقینی بنانے پر زور دیا ۔ اگر درخواست میں نقائص یا کمی ہے تو ادخال کے اندرون ایک ہفتہ درخواست گذار کو اس کی اطلاعات دینے کی ہدایت دی ‘ منظوریوں میں جو تاخیر کا عمل ہے اس کو گھٹانے حکومت نے نیا نظام تیار کیا ہے ۔ اس پر پابندی کے ساتھ عمل کرنے پر زور دیا ۔ ڈی پی ایم ایس سسٹم پر تمام ٹاؤن پلاننگ عہدیداروں کو مکمل معلومات حاصل کرنے کی بھی ہدایت دی ۔ عہدیدار بہترین خدمات انجام دیتے ہوئے نظم و نسق پر عوام کے اعتماد کو بڑھانے کی کوشش کریں ۔ کے ٹی آر نے حکومت کے آن لائن نظام پر عہدیداروں سے رائے طلب کی اور ٹاؤن پلاننگ عہدیداروں کے جو بھی مسائل ہیں ان کو جلد حل کرنے کا تیقن دیا ۔ درخواستوں کی اندرون 21یوم عدم یکسوئی پر تاخیر کرنے والے عہدیداروں کے خلاف جرمانوں کا انتباہ دیا اور ساتھ ہی ہر تین ماہ میں ایک مرتبہ ٹاؤن پلاننگ عہدیداروں سے ملاقات کا تیقن دیا ۔ انہوں نے بتایا کہ بلدیات میں ٹاؤن پلاننگ عہدیداروں کا اہم رول ہوتا ہے ۔ حکومت کی ترجیحات سے وزیر موصوف نے عہدیداروں کو واقف کرایا ۔ اضلاع کی تنظیم جدید کے بعد اضلاع ہیڈ کوارٹرس پر سڑکوں کی توسیع ‘ غیر مجاز قبضوں کی روک تھام پر خصوصی توجہ دینے کی ہدایت دی ۔ بلدیات کے لے آؤٹ میں پائے جانے والے اوپن پلاٹس کا تحفظ کرنے میں بلدیہ کے کمشنرس سے تعاون کرنے کا مشورہ دیا ۔ غیر مجاز تعمیرات کو روکنے مقامی ٹاؤن پلاننگ حکام سے ریاستی سطح تک کارروائی کرنے تفصیلات فراہم کرنے کے احکامات جاری کئے ۔ موجودہ ایل آر ایس نظام کو مزید مستحکم بنانے اور ٹاؤن پلاننگ کے عہدیداروں کو ٹکنالوجی کا بھرپور استعمال کرنے پر زور دیا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT