Wednesday , December 19 2018

ٹاملناڈو میں ٹامل منیلا کانگریس کا احیاء

ترچرا پلی 28 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق مرکزی وزیر جی کے واسن نے آج رسمی طور پر اپنی نئی سیاسی جماعت ٹامل منیلا کانگریس ( موپنا ) کا آغاز کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اس پارٹی میں روایتی ہائی کمان کلچر کو ختم کیا جائیگا ۔ انہوں نے کانگریس پارٹی کے طرز کارکردگی پرتنقید کی ۔ ایک ریلی سے یہاں ترچرا پلی میں خطاب کرتے ہوئے مسٹر واسن نے کہا کہ انہیں

ترچرا پلی 28 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق مرکزی وزیر جی کے واسن نے آج رسمی طور پر اپنی نئی سیاسی جماعت ٹامل منیلا کانگریس ( موپنا ) کا آغاز کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اس پارٹی میں روایتی ہائی کمان کلچر کو ختم کیا جائیگا ۔ انہوں نے کانگریس پارٹی کے طرز کارکردگی پرتنقید کی ۔ ایک ریلی سے یہاں ترچرا پلی میں خطاب کرتے ہوئے مسٹر واسن نے کہا کہ انہیں اس بات کا افسوس ہے کہ ان کے والد جی کے موپنار کی جانب سے قائم کردہ جماعت ٹامل منیلا کانگریس کو کانگریس میں ضم کردیا تھا ۔ یہ پارٹی ان کے والد نے کانگریس سے علیحدگی اختیار کرتے ہوئے بنائی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ اس پارٹی کے کانگریس میں انضمام کے نتیجہ میں ٹاملناڈو کے عوام کا کوئی فائدہ نہیں ہوا تھا ۔ موپنار نے 1996 میں کانگریس کے خلاف بغاوت کرتے ہوئے ٹی ایم سی کے قیام کا اعلان کیا تھا تاہم واسن نے اسے اپنے والد کے انتقال کے بعد 2002 میں کانگریس میں ضم کردیا تھا ۔ انہوں نے اپنے حامیوں سے کہا کہ اب نئی پارٹی میں روایتی ہائی کمان کلچر نہیں ہوگا ۔ اب پارٹی ورکرس کو کسی بھی طرح کے فیصلوں کیلئے ہائی کمان کی توجہ کا انتظار کرنا نہیں پڑیگا اور نہ ہی اس بار پر انہیں افسوس ہوگا کہ پارٹی کے مرکزی مبصرین ریاستی یونٹ کے تعلق سے سنجیدہ نہیں ہیں۔ اب ائرپورٹ پر مرکزی قائدین کا انتظار کرنا نہیں پڑیگا کیونکہ ایسے قائدین ریاستی عاوم کے مسائل کو نہیں سمجھتے ۔ واسن نے 3 نومبر کو کانگریس سے علیحدگی اختیار کرلی تھی اور الزام عائد کیا تھا کہ ہائی کمان کی جانب سے ریاستی یونٹ کو نظر انداز کیا جا رہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT