Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / ٹرمپ کیخلاف احتجاج ،تارکین وطن دفاتر اور اسکولوں سے غیر حاضر

ٹرمپ کیخلاف احتجاج ،تارکین وطن دفاتر اور اسکولوں سے غیر حاضر

WASHINGTON, DC - FEBRUARY 04: Demonstrators march from the White House to the Capitol Building on February 4, 2017 in Washington, DC. The demonstration was aimed at President Donald Trump's travel ban policy. (Photo by Zach Gibson/Getty Images)

سان ڈیاگو، 17 فروری (سیاست ڈاٹ کام) صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی امیگریشن پالیسیوں کے خلاف احتجاج میں پورے امریکہ میں تارکین وطن نے کاروبار بند رکھے اور طلبا کلاسوں میں نہیں گئے نیز ہزاروں مظاہرین سڑکوں پر نکل آئے ۔کارکنوں نے مہاجروں کے بغیر ایک دن منایا تاکہ غیر ممالک میں پیدا ہوئے لوگوں کی اہمیت اجاگر ہو جو امریکی آبادی کا 13 فی صد ہیں۔ یعنی امریکہ میں 4 کروڑ ایسے لوگ ہیں جنہوں نے امریکی شہریت اختیار کی ہے ۔ٹرمپ نے 1.2کروڑ غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف مہم چلائی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ لوگ پر تشدد جرائم کرتے ہیں انہوں نے امریکہ ، میکسیکو سرحد پر ایک دیوار تعمیر کرنے اور امکانی دہشت گردوں کا ملک میں داخلہ روکنے کا وعدہ کیا ہے ۔گوکل کے احتجاج میں حصہ لینے والے شرکا کی کثیر تعداد تھی۔ ہمدردی رکھنے والوں نے بھی دوکانیں بند رکھیں اور کام کرنے والے تارکین وطن نے ایک دن کی اجرت کا نقصان کیا۔

TOPPOPULARRECENT