Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / ٹرمپ کی تقریرایران نیوکلیئر معاہدہ کی خلاف ورزی

ٹرمپ کی تقریرایران نیوکلیئر معاہدہ کی خلاف ورزی

یوروپی یونین خارجہ پالیسی سربراہ مغرینی کو 9مکتوبات کا انکشاف ‘ وزیر خارجہ ایران جواد ظریف کا بیان

تہران ۔ 15اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ کی تقریر جس میں جارحانہ انداز میں نئی حکمت عملی کا اعلان کیا گیا ہے جو ایران کی جانب سے نیوکلئیرمعاہدہ کی خلاف ورزی کے الزام پر مشتمل ہے ۔ وزیر خارجہ ایران جواد ظریف نے کہا کہ ٹرمپ کی جارحانہ تقریر 2015ء کے معاہدہ کی تین دفعات کی خلاف ورزی کرتی ہے ۔ ہفتہ کے دن دیر گئے جواد ظریف نے ٹی وی پر عوام سے خطاب کرتے ہوئے جسے راست نشر کیا گیا کہا کہ وہ جن دفعات کا حوالہ دے رہے ہیں ان کے تحت معاہدہ پر دستخط کرنے والے اس پر نیک نیتی کے ساتھ عمل آوری کریں گے ۔ امریکی انتظامیہ اور امریکی کانگریس کو ایران کے نیوکلئیر پروگرام سے متعلق نئی تحدیدات دوبارہ عائد کرنے سے باز رہنا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ پہلے ہی یوروپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ فریڈرک مغرینی کو 9مکتوبات روانہ کرچکے ہیں اور واضح کرچکے ہیں کہ امریکہ نے معاہدہ کے تحت عائد پابندیوں کی تکمیل سے یا تو قاصر رہا ہے یا ان پر عمل آوری میں تاخیر کررہا ہے ۔ جواد ظریف نے کہا کہ وہ نیا مکتوب ٹرمپ کی تقریر کے بارے میں جمعہ کے دن روانہ کرچکے ہیں ۔

انہوں نے یاد دہانی کی کہ امریکہ طویل عرصہ تک تحدیدات عائد کرچکا ہے اور اسلامی جمہوریہ ایران کو راحت رسانی روک چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایران یقیناً اپنا ردعمل ظاہر کرنے کا حق محفوظ رکھتا ہے ۔ ٹرمپ نے اپنی تقریر میں ایران کی اپنی ذمہ داریوں کی تکمیل کی توثیق کرنے سے انکارک ردیا ہے اور انتباہ دیا ہے کہ وہ اگر چاہیں تو معاہدہ کو کسی بھی وقت چاک کرسکتے ہیں ۔ وزیر خارجہ ایران نے کہا کہ ایران کا اس علاقہ میں اثر و رسوخ ہے اور اس کا میزائل پروگرام غیرقانونی نہیں ہے ۔ ٹرمپ نے کہا تھا کہ وہ امریکی کانگریس کی ان خطروں کی یکسوئی کیلئے نئے اقدامات پر عمل آوری کی کوششوں کی تائید کریں گے ۔ ان کے تبصرے سے صدر ایران حسن روحانی کو سخت جواب دینے پر مجبور کردیا ۔ حسن روحانی نے ان باتوں کو صرف الزامات اور صرف الفاظ قرار دیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT