Tuesday , September 25 2018
Home / Top Stories / ٹرمپ کی خارجہ پالیسی یوروپ کو بااختیار بنائے گی ؟

ٹرمپ کی خارجہ پالیسی یوروپ کو بااختیار بنائے گی ؟

بروسیلز، 22جون (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی ایران، یوروپی یونین سے درآمدات پر نئے کسٹم ڈیوٹی شرحوں کی سخت پالیسی اور یوروپی یونین کے دفاعی اخراجات میں اضافہ وغیرہ مغربی ملکوں کو بااختیار بنانے کی پالیسی کا حصہ ہے ۔امریکہ کے یوروپی اور یوریشیائی امور کے معاون وزیر خارجہ ویس میشیل نے جمعرات کو بروسیلز میں یوروپی اور ناٹو افسران کو خطاب کرتے ہوئے دعوی کیا کہ اس طر ح کی پالیسیوں کے نہیں ہونے کی وجہ سے چین، روس اور ایران جیسے ملک امریکہ اور یوروپی ملکوں کو سفارتی اور فوجی قیادت کے معاملے میں پیچھے چھوڑ دیں گے۔ مسٹر مشیل نے کہا کہ ان معاملات پر سخت پالیسی اپنانے پر ہمیشہ فوراً اتفاق رائے نہیں ہوجاتا لیکن ان کو نظر انداز کرکے ہمیں اس کی کہیں زیادہ قیمت چکانی پڑے گی۔ان تمام مسائل ، ایران ، دفاعی اخراجات ، تجارت وغیرہ پر امریکہ یورپ کے ساتھ مل کر آگے بڑھنے کا راستہ تلاش کررہا ہے ۔ اس کے تئیں ہم پوری طرح سے عہد بند ہیں ۔ ہم ان مسائل پر کھل کر بحث و مباحثہ او ر تال میل کرسکتے ہیں لیکن ان پر بہر حال ہمیں کام کرنا ہوگا۔ ہم امید کرتے ہیں کہ ہماری باہمی کوششوں سے دنیا کے پیچیدہ مسائل کا حل نکل سکے گا۔مسٹر مشیل نے کہا کہ یوروپی اشیاء پر امریکہ کی طرف سے درآمداتی ٹیکس کی شرحوں میں اضافہ سے تجارتی عدم توازن کا مسئلہ حل ہوجائے گا۔ یوروپی دوست ملکوں کی کمزور ہوچکی افواج کو مستحکم کرنے کے لئے دفاع پر دو فیصد خرچ کیا جائے گا۔ ایران نیوکلیائی معاہدہ سے الگ ہونے سے اس کے نیوکلیائی پروگرام کو محدود کرنے میں مدد ملے گی۔

مکمل نیوکلیائی تحدید اسلحہ کا کام شروع :ٹرمپ
واشنگٹن،22جون (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ شمالی کوریا کے ذریعہ چار بڑے نیوکلیائی تجرباتی مقامات کو تباہ کرنے کے ساتھ ہی مکمل نیوکلیائی تحدید اسلحہ کا آغاز ہوچکا ہے ۔مسٹر ٹرمپ نے کل وائیٹ ہاوس میں کابینہ کی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شماکی کوریا نے میزائل تجربات بند کردئے ہیں ۔وہ اپنے نیوکلیائی تجربات کے مقامات کو تباہ کررہا ہے ۔چار نیوکلیائی تجربات کے مقامات کو تباہ کیا جاچکا ہے ۔ اس طرح مکمل نیوکلیائی تحدید اسلحہ کا آغاز ہوگیا ہے ۔امریکہ کے وزیر دفا ع جم میٹس سے صحافیوں نے سوال پوچھا تھا کہ مسٹر ٹرمپ اور شمالی کوریا کے لیڈر کم جونگ ان کے درمیان تاریخی چوٹی بات چیت کے بعد شمالی کوریا نے نیوکلیائی تحدید اسلحہ کے لئے کیا کیا ہے ۔ اس کے جواب میں مسٹر میٹس نے کہاتھا’مجھے اس کا کوئی علم نہیں ہے ۔ ابھی اس عمل کا آغاز ہوا ہے ۔ تفصیلی بات چیت کا آغاز ابھی نہیں ہوا ہے اس وقت اس سلسلے میں کچھ زیادہ نہیں کہا جاسکتا ہے ۔’وائیٹ ہاوس میں ہوئے کابینی اجلاس میں مسٹر میٹس مسٹر ٹرمپ کے قریب کی کرسی پر بیٹھے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT