ٹریفک حادثات کی روک تھام کیلئے حکومت سے اقدامات

قومی شاہراہوں پر ٹریفک پولیس اسٹیشنوںکا قیام

حیدرآباد ۔ 12 مارچ (سیاست نیوز) ریاست میں دن بدن بڑھتے ہوئے ٹریفک حادثات کی وجہ سے ہونے والی اموات پر روک لگانے کیلئے محکمہ پولیس کی جانب سے ہر ممکن اقدام کیا جارہا ہے اور مزید اقدامات کے تحت محکمہ پولیس کی جانب سے بڑی سڑکوں پر مسلسل پولیس گشتی کو بڑھاتے ہوئے ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیوں پر روک لگانے کی کوشش کی جارہی ہے اور اس مناسبت سے قومی شاہراہوں پر ٹریفک پولیس اسٹیشنس کے قیام کے اقدامات کئے جارہے ہیں اور ان شاہراہوں پر پولیس گشتی کو بڑھانے کیلئے 400 موٹر کاریں خریدنے کی تجویز ہے۔ سالانہ ریاستی سطح پر 22 ہزار سڑک حادثات ہورہے ہیں جن میں 7 ہزار افراد ہلاک ہورہے ہیں اور مزید 23 ہزار افراد زخمی ہورہے ہیں اور پولیس تحقیقات سے واضح ہوا ہیکہ ان حادثات کی اصل وجوہات ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی اور تیز رفتاری اور گاڑیوں میں حد سے زیادہ مسافرین کی سواری، غلط راستوں پر گاڑیاں چلانا، لال بتی جلنے کے باوجود نہ رکنا اور دیگر کئی وجوہات ہیں، خاص کر شہری علاقوں میں ایسے حاثات کی وجہ سے ٹریفک میں بھی زبردست خلل پڑتا ہے۔ ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیاں کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج کرتے ہوئے جرمانے وصول کئے جانے کے باوجود گاڑی راں افراد میں تبدیلی واقع نہیں ہورہی ہے۔ ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیوں پر سال 2016ء میں 71,07,173 مقدمات درج کئے گئے تھے جو بڑھتے ہوئے سال 2018ء تک 81,94,953 مقدمات تک پہنچ گئے ہیں اور وصول کردہ جرمانوں کی رقم 169-124 کروڑ روپئے ہے۔ اسی مناسبت سے دیکھا جائے تو ریاستی سطح پر روزانہ 20 ہزار مقدمات درج کئے جارہے ہیں جس سے واضح ہوتا ہیکہ معاملہ کتنا پیچیدہ ہے اور پولیس کا خیال ہیکہ اگر ہر کوئی ٹریفک قوانین پر عمل آوری کو یقینی بنائے گا تو حادثات کی روک تھام کی جاسکتی ہے اور اسی مناسبت سے پولیس نے مستقبل قریب میں خصوصی ٹریفک مہم چھیڑنے کا فیصلہ بھی کیا ہے اور ریاستی سطح پر قومی شاہراہوں پر ٹریفک پولیس اسٹیشنس کے قیام سے متعلق رپورٹ بھی تیار کرلی ہے۔ عہدیداران کے مطابق وقارآباد، منے گوڑا اور کوڑنگل وغیرہ میں قائم کئے جاچکے ہیں اور مستقبل میں ہر 50 کیلو میٹر کے فاصلہ پر ایک ٹریفک پولیس اسٹیشن کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔ ان تمام اقدامات کے ذریعہ پولیس ٹریفک و سڑک حادثات کی روک تھام اور ہلاکتوں کو روکنے کے نشانے پر پہنچنے کیلئے پُرعزم ہے۔

TOPPOPULARRECENT